جمعہ کو اسلام آباد میں عوام کا سمندر جمع ہوگا ، نواز شریف کی طرح اب آصف زرداری کا پیچھا کروں گا :عمران خان

جمعہ کو اسلام آباد میں عوام کا سمندر جمع ہوگا ، نواز شریف کی طرح اب آصف ...

دادو (مانیٹرنگ ڈیسک) چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ آئندہ جمعے کو اسلام آباد آئیں اور انکے ساتھ ملکر نواز شریف سے استعفے کا مطالبہ کریں۔ انہوں نے یہ اعلان بھی کیا کہ جس طرح پہلے انہوں نے پنجاب میں نواز شریف کا پیچھا کیا اسی طرح اب وہ سندھ میں آصف زرداری کا پیچھا کریں گے۔ گزشتہ روز دادو میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ لیاقت جتوئی کو تحریک انصاف میں خوش آمدید کہتا ہوں، وقت ثابت کرے گا کہ آپ نے جو فیصلہ سندھ اور پاکستان کیلئے کیا وہ درست تھا۔ عمران خان نے اپنے دھواں دار خطاب میں سیاسی مخالفین کو آڑے ہاتھوں لیا، انکا کہنا تھاآصف زرداری نے میرے متعلق کہا مجھے سیاسی سمجھ نہیں، اللہ سے دعا ہے مجھے زرداری جتنی سمجھ نہ دے ، زرداری نے وہ کارنامہ سرانجام دیا ہے جو ملٹری ڈکٹیٹر بھی انجام نہیں دے سکتا تھا، چاروں صوبوں کی جماعت کو چھوٹی سی جماعت بنا دیا، جس شاندار طریقے سے پیپلز پارٹی کو تباہ کیا اسکی مثال نہیں ملتی۔زرداری اور مولانا فضل الرحمان د و بڑے شاطر سیاستدان ہیں، زرداری تو عوام میں جا نہیں سکتا، سب اسے ڈاکو کہتے ہیں،البتہ زرداری منافق نہیں ، اس نے یہ بھی کبھی نہیں کہا میں شریف ہوں اور باہر پڑے پیسے واپس لاؤنگا ، مولانا فضل الرحمان اسلام کے نام پر سیاست کرتا ہے تو ڈیزل کے نعرے لگتے ہیں۔ نواز شریف اب تک معصوم اور مظلوم بنا ہوا تھا اب پھنس گیا ہے، نواز شریف کو 30 سال سے جانتا ہوں، مجھے معلوم ہے اس نے کیسے پیسہ بنایا۔ پانامہ میں نام آنے پر دنیا میں نواز شریف کی شکل سامنے آئی، پانامہ کیس میں نواز شریف سے جواب لینے میں ایک سال جد و جہد کی، نواز شریف نے ہمیں ٹی او آرز کی بتی کے پیچھے لگا دیا اور خواجہ آصف نے کہا میاں صاحب فکر نہ کرو لوگ بھول جائیں گے، انکی ساری اخلاقیات ختم ہو چکی ہے۔قرضے لینے والی قوم غلام بن جاتی ہے، قرضوں کی قسطیں عوام ٹیکسوں کی شکل میں ادا کرتے ہیں۔ سندھ کے لوگوں کو مخاطب کرتے ہوئے انکا کہنا تھاآپکو کرپشن نے تباہ کیا ہے، چھوٹا سا طبقہ پاکستان کو لوٹ رہا ہے اور لٹنے کیوجہ سے قوم غریب ہو رہی ہے۔جلسہ سے خطاب میں شاہ محمود قریشی اور لیاقت جتوئی کا کہنا تھا وزیراعظم کے عہدے پر رہتے ہوئے سرکاری ملازم نواز شریف سے تفتیش کیسے کر سکتے ہیں؟ تفتیش کے خاتمے تک عہدے سے استعفیٰ دیں۔ جے آئی ٹی کے سامنے عزیر بلوچ جیسے ملزم پیش ہوئے ہیں اب ملک کا سب سے طاقتور آدمی جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہو گا، یہ تحریک انصاف کا جدوجہد کا نتیجہ ہے۔ نواز شریف استعفیٰ دیں یا اسمبلیاں تحلیل کر کے الیکشن کرانے کا اعلان کریں۔ 28اپریل کو عوام کی کچہری فیصلہ کرے گی کہ نواز شریف اقتدار میں رہنے کے اہل ہیں یا نہیں۔اطلاعات کے مطابق سابق وزیر اعلیٰ سندھ لیاقت جتوئی نے پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت کا اعلان کر دیاہے،

مزید : صفحہ اول