وزیر اعظم پر تنقید ہو سکتی ہے تو فوج کوئی مقدس گائے نہیں: اعتزازاحسن

وزیر اعظم پر تنقید ہو سکتی ہے تو فوج کوئی مقدس گائے نہیں: اعتزازاحسن

اسلام آباد(اے این این)سینیٹ میں قائد حزب اختلاف سینیٹر اعتزاز احسن نے اپنے سابقہ بیان پر ڈٹے رہتے ہوئے کہا ہے کہ مریم نواز کے سمدھی ڈی جی آئی ایس آئی لیفٹیننٹ جنرل نوید مختار کی اہلیہ کے ماموں ہیں، اگر وزیر اعظم پر تنقید ہو سکتی ہے تو اداروں کے سربراہوں پر کیوں نہیں ، فوج کوئی مقدس گائے نہیں ، میرے بیان پر جس طرح آئی ایس پی آر نے رد عمل کا اظہار کیا ہے اس سے ان لوگوں کو بھی اس رشتہ داری کا پتہ چل گیا جنہیں میرے بیان سے پہلے علم نہیں تھا۔انکا کہنا تھا ڈی جی آئی ایس آئی کی مریم نواز شریف سے بہت قریبی رشتہ داری ہے، مریم نواز کے سمدھی ڈی جی آئی ایس آئی لیفٹیننٹ جنرل نوید مختار کی اہلیہ کے ماموں ہیں یا تو آئی ایس پی آر تردید کردے کہ ان کی رشتہ داری نہیں ، اگر رشتہ داری ہے تو اس حقیقت کو تسلیم کرنا چاہیے۔ آئی ایس پی آر نے جس طرح اس سٹوری کو بنایا ہے اس سے میری اتنی شہرت ہوگئی ہے جتنی نہیں ہونی تھی، یہ میرے ذاتی خیالات تھے ان سے پارٹی کا کوئی تعلق نہیں ، میرے بیان کے بعد جس کو اس بات کا پتہ نہیں تھا آئی ایس پی آر نے ان لوگوں کو بھی بتادیا،اعتزاز احسن کامزید کہنا تھا ڈی جی آئی ایس آئی بھی ہماری طرح کا انسان ہے اس میں بھی ہماری طرح کی کمزوریاں ہوں گی، فوج نے بطور ادارہ بہت کام کیا ہے اور جنرل راحیل شریف کی قیادت میں بہت نام کمایا ہے، لیکن اس کا یہ مطلب نہیں کہ فوج میں موجود ہر شخص مقدس گائے ہے۔ یہ تنقید کی بات نہیں بلکہ میں نے ایک حقیقت بیان کی ہے، ملٹری اور جوڈیشل اسٹیبلشمنٹ ہمیشہ ن لیگ کے حق اور پیپلز پارٹی کیخلاف ہوتی ہے، جب 1993میں نواز شریف کی حکومت کو بحال کیا گیا تو اس میں فوج کی مرضی تھی جبکہ بینظیر کی حکومت کو فارغ کرنے میں بھی آرمی چیف کی مرضی شامل تھی۔ اصغر خان کیس میں ن لیگ کیخلاف فیصلہ آیا ہے لیکن کوئی بینچ اس پر عملدر آمد کیلئے قائم نہیں ہو رہا ۔

اعتزاز احسن

مزید : صفحہ اول