آرمینیا میں نسل کشی کی 102 ویں برسی کل منائی جائیگی

آرمینیا میں نسل کشی کی 102 ویں برسی کل منائی جائیگی

انقرہ(این این آئی)آرمینیا میں نسل کشی کی 102 ویں برسی کل (پیر کو) منائی جائیگی،میڈیارپورٹس کے مطابق کارنیگی اینڈومینٹ فار انٹر نیشنل پیس کے تھامس ڈی وال نے کہا کہ اس جنگ میں بہت سے ترک ہلاک ہوئے ۔ کچھ روسی فوج کے ہاتھوں ، ترکی اس وقت خود مقبوضہ علاقہ تھا اور ٹوٹ چکا تھا۔ اس لیے آرمینیا کے شہری خود دشمن کے طور پر شناخت کیے گئے تھے ۔ایک تاریخی واقعے کے مطابق جنگ عظیم اول کے دوران جب سلطنت عثمانیہ کا ا شیرازہ بکھرا تو آرمینیا کے لگ بھگ 15 لاکھ شہری ہلاک ہوئے ۔ بہت سے مورخین اس سے اتفاق کرتے ہیں لیکن ترکی اس سے اختلاف کرتا ہے جسے ان مظالم پر مورد الزام ٹھہرایا جاتا ہے ۔ اب جب24 ا پریل کو دنیا بھر میں آرمینیا کے شہر ی اس واقعے کی 102ویں برسی منا رہے ہیں۔دنیا بھر میں موجود آرمینیا کے شہری ان لاکھوں افراد کو خراج عقیدت پیش کر رہے ہیں جو جنگ عظیم اول میں اس واقعے میں ہلاک ہوئے جسے وہ سلطنت عثمانیہ کی جانب سے قتل عام قرار دیتے ہیں ۔ جب کہ ترکی اس کی تردیدد کرتا ہے ۔

امریکہ میں آرمینیا کے سفیر گریگو ہوہنسین کہتے ہیں کہ ہم آج کے جدید دور کے ترکوں کو 102 سال قبل ہونے والے واقعے کاالزام نہیں دیتے لیکن اس ملک کی قیادت کی، جو سلطنت عثمانیہ کی جانشینی کی دعوے دار ہے، یہ ایک اخلاقی ذمہ داری ہے کہ وہ اس معاملے سے نمٹے۔

مزید : عالمی منظر