پاک افغان شعراء ادباء اور قلم کاروں نے پاک افغان مسائل امن وامان کی برقراریت کیلئے ایکا کردیا

پاک افغان شعراء ادباء اور قلم کاروں نے پاک افغان مسائل امن وامان کی برقراریت ...

نوشہرہ(بیورورپورٹ)خوشحال خان خٹک فکری، ادبی بہیر کے لئے پاک افغان شعراء ادباء اور قلم کاروں نے پاک افغان مسائل امن وامان کی برقراریت کیلئے ایکا کردیا چودہ رکنی تھنک ٹینک کمیٹی تشکیل دے دی گئی جس میں افغانستان سے سات خیبرپختونخوا سے پانچ اور کوئٹہ بلوچستان سے دو ارکان شامل ہیں جو کہ بہت جلد خوشحال خان خٹک فکری،ادبی بہیر کے زیراہتمام کے فورم سے 30، 31 جولائی کابل لغمان، 23ستمبر کو سوات اور دسمبر کے مہینے میں ملنگ جان کے مزار ننگر ہار پر مشاعروں اور ادبی جرگوں اور ادبی کانفرنس کا اہتمام کرے گی خوشحال خان خٹک فکری ادبی بھیر کا افتخاری مرکز مسعود عباس خٹک کے حجرے میں ہوگا ان خیالات کااظہار خوشحال خان خٹک فکری، ادبی بھیر کے ’’دا خوشحال خان خٹک فکر اونننی دور‘‘ کے عنوان سے دوروزہ ادبی کانفرنس کے بعدرہنماؤں خوشحال روہی، عالمزیب خان، مسعود عباس خٹک، ڈاکٹر قاسم کاکڑ اور دیگر نے مسعود عباس خٹک کی رہائش گاہ پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ افغانستان اور پاکستان کے پختون شعراء، ادباء، افسانہ نگاران اور دیگر قلم کار پختون قوم کے مسائل کو اجاگر کرنے اور ان مسائل کوخوشحال خان خٹک کے فکر، پرامن جدوجہد کے ذریعے حل کرنے کیلئے تجاویز دینا مقصود ہے کیونکہ خوشحال خان خٹک نے اپنی زندگی کے آخری حصہ میں پختون قوم کی تعلیمی،معاشی، اقتصادی، سیاسی اورسماجی اعتبار سے شعور بیداری میں جو کردار ادا کیاتھا موجودہ حالات اب ہم سے بھی وہی تقاضہ کرتی ہے کہ ہم تمام مکاتب فکر کے پختون قوم لر، بر اور غر کے پختونوں کیلئے اپنا پرامن جدوجہد شروع کریں اور اسی میں پختون قوم کی بقاء اور سا لمیت پوشیدہ ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر