صرف سعودی شہریوں کے لئے مختص وہ جگہ جہاں غیرملکی شہری زبردستی گھس گئے، ہنگامہ برپاہوگیا

صرف سعودی شہریوں کے لئے مختص وہ جگہ جہاں غیرملکی شہری زبردستی گھس گئے، ...
صرف سعودی شہریوں کے لئے مختص وہ جگہ جہاں غیرملکی شہری زبردستی گھس گئے، ہنگامہ برپاہوگیا

  


جدہ (مانیٹرنگ ڈیسک) بدھ کے روز جدہ ہلٹن ہوٹل میں یونیورسٹی آف بزنس اینڈ ٹیکنالوجی کے زیر اہتمام منعقد کیا گیا کیریئر فیئر اس وقت ہنگامے کا شکار ہو گیا جب وہاں سعودی شہریوں کے ساتھ بے روزگار غیر ملکیوں کی بڑی تعداد بھی پہنچ گئی۔ سعودی گزٹ کے مطابق اس کیریئر فیئر کا اہتمام سعودی نوجوانوں کیلئے کیا گیا تھا لیکن سینکڑوں کی تعداد میں غیر ملکی بھی وہاں چلے آئے۔

ایک کمپنی کے نمائندہ ابراہیم ناشر نے بتایا کہ ان کے پاس تقریباً 600 غیر ملکیوں کے سی وی آئے۔ انہوں نے بتایا ”یہ تمام غیر ملکی روزگار کے متلاشی تھے۔ ان سب کا کہنا تھا کہ وہ فوری طور پرملازمت شروع کرنے کیلئے تیار ہیں۔ مجھے اتنے سارے غیر ملکیوں کو دیکھ کر حیرانی ہوئی کیونکہ یہ کیریئر فیئر صرف سعودی نوجوانوں کیلئے منعقد کیا گیا تھا۔ مجھے لیبر آفس کے ترجمان سے رابطہ کرنا پڑا جنہیں میں نے بتایا کہ غیر ملکی بہت بڑی تعداد میں وہاں آگئے تھے۔ ترجمان نے مجھے بتایا کہ غیر ملکیوں کو کیریئر فیئر میں آنے کی اجازت نہیں تھی اور یہ کہ ان کی درخواستیں قبول نہ کی جائیں۔“

سعودی عرب کی حکومت نے متعدد شاپنگ مالز میں غیر ملکیوں کو ملازمت کرنے سے روک دیا

ایک اور کمپنی کی نمائندہ نوین سمان نے بتایا کہ انہیں بھی تقریباً 400 غیر ملکیوں نے درخواستیں دیں۔ نوین بھی اس بات پر حیران و پریشان تھیں کہ غیر ملکی نوجوان اتنی بڑی تعداد میں وہاں کیسے داخل ہوگئے۔ سعودی نوجوان خالد السفاری کا بھی کہنا تھا کہ وہ کیریئر فیئر میں غیر ملکی نوجوانوں کی بڑی تعداد کو دیکھ کر وہ سخت صدمے کا شکار ہوئے۔ انہوں نے سوال اٹھایا کہ غیرملکیوں کو وہاں داخل ہونے سے روکا کیوں نہیں گیا۔ خالد السفاری نے اس بات پر بھی ناگواری کا اظہار کیا کہ غیر ملکی شہری بھی ان کے ساتھ ملازمت کی درخواست دینے کھڑے تھے۔

رمان الغامدی نامی سعودی نوجوان نے اپنی پریشانی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ”مجھے تو لگتا ہے کمپنیاں سعودی نوجوانوں کو ملازمت دینے میں سنجیدہ نہیں ہیں۔ مجھے تو بس روزگار کا بنیادی حق چاہیے، جو میں غیر ملکیوں کے ساتھ مقابلہ کئے بغیر حاصل کرسکوں۔“

یونیورسٹی آف بزنس اینڈ ٹیکنالوجی کے رہنمائی مرکز کے ڈائریکٹر لوئے الطیار کا کہنا تھا کہ کیریئر فیئر میں شرکت کے لئے ایک آن لائن لنک فراہم کیا گیا تھا جس پر سعودی نوجوانوں کیلئے علاوہ غیر ملکیوں کی بڑی تعداد نے بھی درخواستیں دے ڈالیں۔ انہوں نے بتایا کہ کیریئر فیئر میں 40 کمپنیاں 3000 سے زائد ملازمتیں پیش کررہی تھیں۔ ان کمپنیوں کوبتادیا گیا کہ وہ صرف سعودی شہریوں کے سی وی دیکھیں اور غیر ملکیوں کے سی وی نظر انداز کردیں۔

مزید : عرب دنیا