سازش کے تحت دینی جماعتوں کو دیوار سے لگانے کی کوشش کی جا رہی ہے : فضل الرحمن

سازش کے تحت دینی جماعتوں کو دیوار سے لگانے کی کوشش کی جا رہی ہے : فضل الرحمن

  

ڈیرہ اسماعیل خان (بیورورپورٹ)مرکزی امیر جمعیت علماء اسلام مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ 2018کے الیکشن میں متحدہ مجلس عمل حکومت بنائیگی عمران خان کہتا ہے کہ اسکی ٹوکری میں بیس گندے ٹماٹرہیں ہم کہتے ہیں کہ تمھاری ٹوکری میں موجود تمام ٹماٹر گندے ہیں منظم سازش کے تحت دینی جماعتوں کو دیوار سے لگانے کی کوشش کی جارہی ہے انصاف کے نام پر سیاستدانوں کا استحصال کیا جارہا ہے ادارے ایک منتخب وزیر اعظم کو تو گھر بھیج سکتے ہیں لیکن ایک وزیر اعلی کے پی کے کے خلاف خود اسکی اپنی پارٹی کے ایم پی ایز اور ایم این ایز پریس کانفرنس کرتے ہیں لیکن وزیر اعلی سے پوچھنے والا آج کوئی نہیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈیرہ اسماعیل خان کے حقنواز پارک میں منعقد ہونیوالی غلبہ اسلام کانفرنس کے بڑے اجتماع سے کیا کانفرنس سے سابق وزیر اعلی اکرم خان درانی ،اپوزیشن لیڈر خیبر پختونخواہ اسمبلی مولانا لطف الرحمن ،پیر ذوالفقار احمد نقشبندی،ایم پی اے محمود خان بیٹنی ،عبد الحلیم خان قصوریہ ،ملک مشتاق احمد ڈار،مولانا اشرف علی ودیگر نے بھی خطاب کیا کانفرنس کی سیکورٹی کے حوالے سے پولیس نے سخت ترین انتظامات کر رکھے تھے پولیس کے ساتھ جے یو آئی کے سالار بھی اپنی ڈیوٹیاں سر انجام دے رہے تھے مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ مذہبی جماعتوں سے منافرت پہلے دن سے ہی نظر آرہی ہے ہمیں طعنہ دیا جاتا ہے کہ علماء کرام ایک پلیٹ فارم پر کیوں اکٹھے نہیں ہوتے لیکن آج ہم نے متحدہ مجلس عمل کے قیام سے ان سازشوں کو ناکام بنا دیا ہے ادارے آج انصاف دینے کی بات کر رہے ہیں لیکن یہ کیسا انصاف ہے جو نظر نہیں آرہا پی ٹی آئی نے احتساب کمیشن بنایا لیکن جب دیکھا کہ اسکا وزیر اعلی اس احتساب کے شکنجے میں آتا محسوس ہوا تو احتساب کمیشن کے سربراہ کو گھر بھیج دیا گیا مولانا فضل الرحمن نے نام لیئے بغیر ڈیرہ اسماعیل خان کے نوابوں اور سرداروں کا زکر کرتے ہوئے کہا کہ دیکھنے میں یہ بڑے بھولے لگتے ہیں لیکن ہمیں معلوم ہے کہ انکی ہوا کیسے نکالی جاسکتی ہے ۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -