بھرتیوں پر پابندی: چیف جسٹس نے الیکشن کمیشن کے فیصلے پر ازخود نوٹس لے لیا

بھرتیوں پر پابندی: چیف جسٹس نے الیکشن کمیشن کے فیصلے پر ازخود نوٹس لے لیا
بھرتیوں پر پابندی: چیف جسٹس نے الیکشن کمیشن کے فیصلے پر ازخود نوٹس لے لیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے سرکاری اداروں میں بھرتیوں پر پابندی کے الیکشن کمیشن کے فیصلے پر ازخود نوٹس لے لیا۔

الیکشن کمیشن نے 11 اپریل کو عام انتخابات کے پیش نظر سرکاری اداروں میں بھرتیوں پر پابندی عائد کی تھی جس پر آج چیف جسٹس نے ازخود نوٹس لے لیا۔

سپریم کورٹ نے سیکرٹری الیکشن کمیشن کو نوٹس جاری کردیا جب کہ چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ کل ازخود نوٹس کی سماعت کرے گا۔بینچ میں شامل دیگر معزز ججز میں جسٹس عمر عطاءبندیال اور جسٹس اعجازالاحسن شامل ہیں۔

یاد رہے کہ سرکاری اداروں میں بھرتیوں سے متعلق الیکشن کمیشن کے فیصلے میں کہا گیا تھا کہ وفاقی، صوبائی اور مقامی حکومتوں کے اداروں میں بھرتیوں پر پابندی ہوگی جس کا اطلاق یکم اپریل 2018 سے ہوگا۔

الیکشن کمیشن کے اعلامیے میں کہا گیا تھا کہ بھرتیوں پر پابندی کا اطلاق وفاقی اور صوبائی پبلک سروس کمیشن کے تحت ہونے والی بھرتیوں پر نہیں ہوگا۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -علاقائی -اسلام آباد -