ایرانی صدر کا دورہ اہم ،تعلقات ٹھیک کرنا کس کی سٹریٹجک مجبوری ہے؟ ملیحہ لودھی نے بتا دیا

ایرانی صدر کا دورہ اہم ،تعلقات ٹھیک کرنا کس کی سٹریٹجک مجبوری ہے؟ ملیحہ ...
 ایرانی صدر کا دورہ اہم ،تعلقات ٹھیک کرنا کس کی سٹریٹجک مجبوری ہے؟ ملیحہ لودھی نے بتا دیا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

کراچی ( مانیٹرنگ ڈیسک ) سابق سفارتکار ملیحہ لودھی نے کہا ہے کہ پاک، ایران تعلقات کو جو نقصان پہنچا اسے ختم کرنے کیلئے ایرانی صدر کا دورہ اہم ہے، ایران کے ساتھ تعلقات ٹھیک کرنا پاکستان کی سٹریٹجک مجبوری ہے، پاکستان کو بھارت اور افغانستان کی سرحدوں پر کشیدگی کا سامنا ہے، ایران کے ساتھ تجارت پر امریکہ کی کوئی پابندی نہیں ہے، ایران اور سعودی عرب کے تعلقات بہتر ہونے سے پاکستان کیلئے سفارتی اور معاشی سپیس کھل گئی ہے۔

 ان خیالات کا اظہار انہوں نے نجی  ٹی وی کے پروگرام ’’ آج شاہزیب خانزادہ کے ساتھ‘ میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ پروگرا م میں سینئر  صحافی مجیب الرحمان شامی ،مسلم لیگ ( ن)  کے رہنما راناثنا اللہ ، عاصمہ شیرازی اورمعاشی ماہر سہیل خان  نے بھی شرکت کی ۔

"جیونیوز "کے  ہی ایک اور پروگرام "جیو پاکستان" میں گفتگو کرتے ہوئے ملیحہ لودھی نے کہا کہ پاکستان کے ایران کے ساتھ تعلقات امریکہ کا نہیں ہمارا معاملہ ہے، اگر پاک، ایران بہتر تعلقات امریہا کے مفاد میں نہیں تو وہ امریکہ کا مفاد ہے ہمارا نہیں۔ ایرانی صدر کا دورہ اس لیے بھی اہم ہے کہ کچھ عرصہ پہلے دونوں ممالک میں کشیدگی ہوئی تھی، کشیدگی سے ہوئے نقصان کے ازالے کے لیے بھی یہ اقدامات ضروری ہیں۔ 

ملیحہ لودھی کا کہنا تھاکہ پاکستان اور چین کے تعلقات 70 دہائیوں سے مضبوط رہے ہیں۔