واسا نے پانی کی فر اہمی میں 50فیصد کمی کی سفارش کر دی

واسا نے پانی کی فر اہمی میں 50فیصد کمی کی سفارش کر دی

  

                                                      لاہور( جاوید اقبال) واسا نے صوبائی دارالحکومت کے شہرےوں کو روزانہ فراہم کئے جانے والے پانی میں 50فیصد کمی کرنے کی سفارش کردی ہے ےہ سفارش لاہور میں روز بروز زیر زمین پانی کی نیچے جاتی ہوئی رفتار کو کم کرنے کے لئے دی گئی ہے اس ضمن میں واسا کے ایم ڈی محمد نصیر چودھری نے 4سفارشات اور تجاویز پر مبنی سمری کمشنر لاہور کو ارسال کی ہے جو کمشنر ڈی جی ایل ڈی اے کے زریعے وزیراعلی پنجاب کو بھجوائیں گے ایم ڈی نے انکشاف کیا ہے کہ لاہور میں پانی کے بے دریغ استعمال سے روز بروز زیر زمین پانی کی سطح کم ہوتی جا رہی ہے اور اب حالات ےہاں تک آ چکے ہیں کہ پانی میں سیوریج کی آمیزش سامنے آ رہی ہے اور بعض مقامات پر پانی میں بدبو بھی سامنے آنے لگی ہے جس کی وجہ سے پانی میں سنگھیا کی مقدار بھی بڑھ رہی ہے اس کا واحد حل ےہ ہے کہ نیچے جاتی ہوئی پانی کی مقدار کو فوری طور پر روکنے کے لئے جنگی بنیادوں پر اقدامات کئے جائیں ےومیہ بنیادوں پر شہرےوں کو 80گیلن فی فرد پانی کی مقدار میں 50سے 60فیصد کمی کی جائے اور ےومیہ بنیادوں پر 80گیلن پانی کو کم کرکے 40سے50فی کیپسٹی لایا جائے شہر میں لگائے گئے 461ٹیوب ویلوں کی مقدار کم کرکے بی آر بی کے ارد گرد فوری طور پر 200ٹیوب ویل لگائے جائیں جہاں سے ایک طرف صحت مند پانی حاصل ہو سکے گا دوسری طرف ٹیوب ویلوں پر فرائض سر انجام دینے والے ملازمین کی افرادی قوت میں کمی آئے گی سمری میں کہا گیا ہے کہ راوی میں پھینکا جانے والا گندا اور سیوریج کا پانی بھی لاہور کے پانی کو زہر آلود کررہا ہے پانی راوی میں پھینکنے سے قبل اس کی ٹریٹمنٹ ضروری ہے جس کے لئے ٹریٹمنٹ پلانٹ فوری طور پر لگایا جائے اس حوالے سے ایم ڈی واسا نصیر چودھری کا کہنا ہے کہ اہل لاہورکو صحت مند پانی کی ضروریات کے مطابق فراہمی ےقینی بنا رہے ہیں جو اولین ترجیح ہے لوڈ شیڈنگ کے وقت جنریٹر چلائے جا رہے ہیں پانی کی زیر زمین روز بروز کمی کو پورا کرنے کے لئے ہنگامی انتظامات کئے جائیں گے ۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -