نوسربازوں نے زہریلی اشیاءکھلا کر دو افراد کو موت کے گھاٹ اتار دیا

نوسربازوں نے زہریلی اشیاءکھلا کر دو افراد کو موت کے گھاٹ اتار دیا

  

لاہور(کرائم سیل)صوبائی دارالحکومت کے مختلف علاقوں میں نوسربازوں نے زہریلی اشیاءکھلا کر دو افراد کو موت کے گھاٹ اتار دیا جبکہ ایک شخص ہسپتال میں زیر علاج ہے۔تفصیلات کے مطابق شاہدرہ ٹاﺅن کے علاقہ سے 40سالہ شخص کی نعش مقامی افراد کو ملی جس کی اطلاع پولیس کو دی گئی جنہوں نے اسے قبضہ میں لے کر پوسٹ مارٹم کے لیے میو ہسپتال کے مردہ خانہ میں جمع کروا دیا ہے اسی چرچ سے گلشن راوی کے علاقہ میں سے بھی ایک 35سالہ شخص کی نعش برآمد ہوئی پولیس کے مطابق دونوں افراد کی موت زہریلی اشیاءکھانے کی وجہ سے ہوئی ہے البتہ دونوں سے کوئی بھی شناختی چیز برآمد نہ ہونے کی وجہ سے نعشوں کو پوسٹ مارٹم کے لیے مردہ خانہ میں جمع کر وا دیا گیا ہے۔اور ورثا ءکی تلاش کے لیے اقدامات کیے جا رہے ہیں ۔

اموات کی اصل وجہ پوسٹ مارٹم رپورٹ کے سامنے آنے کے بعد ہی پتہ چل سکیں گیں۔اسلام پورہ بازار میں بھی نوسربازوں نے عامر روڈ کے رہائشی اکبر کوزہریلی چیز کھلا دی جس سے اس کی حالت غیر ہو گئی مقامی افراد نے اس کو قریبی ہسپتال میں منتقل کر دیا۔اکبر کے بھائی لیاقت نے نمائندہ پاکستان کو بتایا کہ اکبر گھر سے سامان خریدنے نکلا تھا کہ یہ واقع رونما ہو گیا۔

مزید :

علاقائی -