ترکی کے نئے نامزد وزیر اعظم ڈاکٹر احمد داﺅد اولونرم طبع شخصیت ہیں

ترکی کے نئے نامزد وزیر اعظم ڈاکٹر احمد داﺅد اولونرم طبع شخصیت ہیں

  

لاہور( اسلم بھٹی)ترکی کے آئندہ نئے وزیر اعظم پروفیسر ڈاکٹر احمد داﺅد اولو ہونگے۔ اس کا اعلان گزشتہ روز برسر اقتدار جماعت اے ۔ کے پارٹی کے منعقدہ کنونشن میں کیا گیا۔ وہ ملک کے 26ویں وزیر اعظم ہونگے۔یاد رہے کہ پروفیسر ڈاکٹر داﺅ داولو وزیر خارجہ کے عہدے پر فائض تھے اور مسلسل 2009 سے اس منصب اس سے قبل یہ دونوں عہدے رجب طیب ایردوآن کے پاس تھے جن کے صدر بننے کے بعد چہ مہ گوئیاں کی جا رہی تھیں کہ طیب ایر دو آن کو کسی ایسے جانشین کی ضرورت ہے جو نسبتاً معتدل مزاج ہو اور سفارت کاری کا وسیع تجربہ رکھتا ہو۔ میڈیا میں گردش کرنے والے ناموں میںان کا نام سر فہرست تھا۔ حتیٰ کہ گزشتہ دنوں 28اگست کو سبکدوش ہونے والے صدر عبداللہ گل نے بھی پروفیسر ڈاکٹر احمد داﺅد اولو کی بطور وزیر اعظم نامزدگی کی خبر کی تائید کر دی تھی۔احمد داﺅد اولو نے سیاسیات میں ڈاکٹریٹ کی ڈگری حاصل کی ہوئی ہے اور وہ مختلف معروف یونیورسٹیوں میں بطور لیکچرار اور پروفیسر اور چیئرمین کام کرتے رہے ہیں۔ جب طیب ایردوآن اور عبداللہ گل کی دعوت پر وہ سیاست میں آئے اور ترکی کے شہر قونیہ سے اے کے پارٹی کے پلیٹ فارم سے 2011میں ممبر پارلیمنٹ منتخب ہوئے۔ وہ یکم مئی 2009سے مسلسل وزارت خارجہ کے عہدے پر فائز چلے آ رہے تھے اور انہیں سفارت کاری اور ڈپلومیسی کا خاصا تجربہ ہے۔ اس سے قبل وہ سفیر بھی رہے اور صدر اور وزیر اعظم کے مشیر کے عہدے پر بھی اپنی خدمات سر انجام دےتے رہے۔پروفیسر ڈاکٹر احمد داﺅد اولو 1959کو قونیہ ترکی میں پیدا ہوئے۔ ابتدائی تعلیم استنبول اور گریجوایشن بو آزچی یونیورسٹی سے کیا۔ اسی یونیورسٹی سے انہوں نے ایم فل اور ڈاکٹریٹ کی ڈگری حاصل کی۔ 1990سے 1995کے دوران انہوں نے ملائشیا میں انٹرنیشنل اسلامک یونیورسٹی میں شعبہ بین الاقوامی امور کی بنیاد رکھی۔ولن واپسی کچھ عرصہ انہوں نے مرمرہ یونیورسٹی کے شعبہ بین الاقوامی امور میں کام کیا۔ اس کے بعد وہ اسی شعبہ کے چیئر مین بھی رہے ۔ عبداللہ گل اور رجب طیب ایردوآن کے کہنے پر وہ سیاست میں آئے۔ اپنے وزارت خارجہ کے دورمیں ترکی کے تمام خارجہ امور اور پالیسی کے وہ معمار سمجھے جاتے ہیں۔پروفیسر ڈاکٹر احمد داﺅ داولو کو ٹھنڈے دل و دماغ کا انسان سمجھتا جاتا ہے۔ وہ نرم اور معتدل مزاج ہیں اور توقع کی جا رہی ہے کہ وہ رجب طیب ایر دو آن کے ساتھ مل کر حکومت افہام و تفہیم سے چلائیں گے لیکن زیادہ تر ہولڈ رجب طیب ایردو آن کا ہی ہوگا۔ ان کی جگہ ملک کا نیا وزیر خارجہ کون ہوگا؟ یہ آئندہ چند دنوں میں واضح ہو جائے گا۔ پروفیسر احمد داﺅد اگلے سال ہونے والے پارلیمانی انتخابات تک اس عہدے پر فائز رہیں گے۔

ترکی

مزید :

صفحہ آخر -