نصاب تعلیم سے اسلامی مضامین کا اخراج گہری سازش ہے،عزیز الرحمان ثانی

نصاب تعلیم سے اسلامی مضامین کا اخراج گہری سازش ہے،عزیز الرحمان ثانی

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر)عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے مرکزی ناظم نشرواشاعت مولانا عزیزالرحمن ثانی،قاری جمیل الرحمن اختر،پیررضوان نفیس،قاری علیم الدین شاکر،مولانا عبدالنعیم،قاری عبدالعزیز نے اپنے مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ نصاب تعلیم سے اسلامی مضامین کا اخراج گہری سازش ہے۔ پنجاب حکومت پنجاب ٹیکسٹ بک بورڈ کے متعلقہ ذمہ داران کے خلاف سخت کاروائی کرے۔ پرائمری کے نصاب سے نکالے گئے اسلامی مضامین دوبارہ شامل کئے جائیں۔ پنجاب حکومت اس معاملے میں اپنی پوزیشن واضح کرے کیونکہ پوری قوم نصاب تعلیم سے اسلام سے متعلق مضامین کے اخراج پر تشویش میں مبتلا ہے۔ اس سازش کے پس پردہ ہاتھوں کو بے نقاب کیا جائے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ہنگامی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ علماء نے مزید کہا کہ مغربی ایجنڈے پر کام کرنے والی این جی اوز نصاب تعلیم کو سیکولر بنانے کی سازش کر رہی ہیں۔پنجاب کے وزیر اعلی نصاب تعلیم میں ناروا تبدیلیوں سے متعلق حکومتی پالیسی کا واضح اور دوٹوک قوم کے سامنے رکھیں ۔ نصاب تعلیم سے اسلامی اسباق و شہدائے وطن کا اخراج اغیار کا ایجنڈا ہے ۔ وطن عزیز میں اگر رحمت عالم ،ازواج مطہرات ، نظریہ پاکستان و شہداء وطن کے اسباق شامل نہیں کرنے تو اسلامی جمہوریہ پاکستان کہلانے کا لیبل بھی اتار دیں۔ لاکھوں قربانیاں کو رائیگاں کرنے کیلئے درسی نظاب میں تبدیلی اغیار کا واضح ایجنڈہ ہے جسے ملک کے سیاستدان اور نام نہاد این جی اوز پروان چڑھا رہی ہیں لیکن اسی کسی سازش کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔ پنجاب ٹیکسٹ بورڈ ایوان اقتدار میں براجمان مسند نشینوں کے حکم کے بغیر ایسا ہر گز نہیں کرسکتا۔علماء نے مطالبہ کیا کہ نکالے گئے اسباق فی الفور نصاب میں شامل کیے جائیں ۔ حکومت کی دین دشمنی کے خلاف اب خاموش نہیں بیٹھیں گے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1