سیاسی جماعتیں چھوٹے چھوٹے مفادات کی خاطر ملکی سلامتی داؤ پر نہ لگائیں : وزیر داخلہ

سیاسی جماعتیں چھوٹے چھوٹے مفادات کی خاطر ملکی سلامتی داؤ پر نہ لگائیں : وزیر ...

اسلام آباد (این این آئی )وفاقی وزیر داخلہ پروفیسر احسن اقبال نے کہا ہے کہ پاکستان کی تیز ترین معاشی ترقی کے باعث ملک خارجی محاذ پر خطرات میں گھرا ہوا ہے ، اس وقت جمہوریت کے خلاف کچھ شخصیات اور بعض میڈیا چینل سازشوں میں مصروف ہیں ، ملک کو اندرونی اتحاد اور اتفاق کی جتنی ضرور ت آج ہے پہلے کبھی نہیں تھی سیاسی جماعتیں چھوٹے چھوٹے مفادات کی خاطر ملکی سلامتی کو داؤ پر نہ لگائیں ، امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے بیان کی پرواہ کئے بغیر دہشت گردی کے خلاف جنگ جاری رکھیں گے کیونکہ پاکستان امریکہ یا کسی اور کی خوشنودی کیلئے نہیں بلکہ ملک کی سلامتی اور قیام امن کیلئے دہشت گردی کے خلاف جنگ لڑ رہا ہے۔ وزارت داخلہ میں اپنا منصب سنبھالنے کے بعد منگل کو اپنی پہلی پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ہوئے وزیر داخلہ نے کہا کہ کراچی میں رینجرز جرائم پیشہ افراد کے خلاف کارروائیاں جاری رکھیں گے۔انہوں نے کہا کہ آئین ،قانون اور جمہوریت کی بالادستی پر یقین رکھنے والوں کو آئین پاکستان ہر طرح کا حق دیتا ہے اور جو آئین و قانون کو نہیں مانتے ان سے ہماری لڑائی ہے۔انہوں نے کہا کہ کراچی میں پر امن سیاست کرنے والوں کا احترام کیا جائے گا ، انتہا پسندی اور دہشت گردی کی سوچ کے خاتمے کیلئے متبادل بیانیہ دیں گے ۔وزیرداخلہ نے کہا کہ سول آرمڈ فورسز کے پاس دوسری جنگ عظیم کا اسلحہ ہے لہٰذااب ان فورسز کو جدید اسلحے اور آلات سے لیس کیا جائے گا۔انہوں نے مزید کہا کہ وزارت داخلہ کے تمام ماتحت اداروں کو وی آئی پی کلچر کے خاتمے اور عوام کے لئے آسانیاں پیدا کرنے کے احکامات جاری کردیئے۔وزیر داخلہ پروفیسر احسن اقبال نے کہا کہ جو کام سابق وزیر داخلہ نے کیا اس کو لے کر آگے بڑھیں گے۔چوہدری نثار کی کامیابیوں کا سلسلہ آگے بڑھائیں۔دہشت گردی کی جنگ کو آگے بڑھائیں گے۔امن و امان صوبوں کی ذمہ داری ہے،کل تما صوبوں کے وزرائے اعلی کا اجلاس طلب کیا ہے۔وزرائے اعلی کے اجلاس میں نیشنل ایکشن پلان پر عمل در آمد کا جائزہ لیا جائے گانیکٹا کو موثر بنایا جائے گا۔سب سے پہلے میں نے نیکٹا کا دورہ کیا۔انہوں نے کہا کہ انتہا پسندی اور دہشت گردی کی سوچ کے خاتمے کے لئے متبادل بیانیہ دینگے۔اب صرف مدرسے کے طالب علم کو نہیں کالج یونیورسٹی کے طالب علموں کو ٹارگٹ کیا جاتا ہے۔متبادل بیانیے کی تیاری کیلئے علما ئے کرام کو بھی کر دار ادا کرنا پڑھے گا،دور جدید کے تقاضوں کے مطابق نوجوانو ں کو گمراہی سے بچایا جائے گا۔نوجوانوں کو سائنس اور تعلم کی طرف راغب کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ وزارت داخلہ کی طرف سے عوام کی سہولت کے لئے اقدامات اٹھانے کا سلسلہ شروع کر دیا گیا۔سب سے پہلا اقدام امیگریشن کے حوالے سے اٹھایا گیا ہے۔امیگریشن کے دوران پروٹوکول کے خاتمے کیلئے کہا ہے۔بیرون ملک سے آنے والوں سے خوشگوار انداز میں پیش آنے کا کہا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ آئندہ سال انتخابات کا سال ہے۔شہریوں کو قومی شناختی کارڈز کی ضرور ت پڑے گی۔نادرا کوکہا گیا ہے کہ زیادہ سے زیادہ موبائل وین خریدیں۔ای پاسپورٹ کے منصوبے پر کام جاری ہے ،نادرا کے ڈیٹا بیس کا دائرہ وزارتوں تک بڑھانے کا کہا گیا ہے۔لوگوں کو لائنو ں میں کھڑا کرنے کی بجائے نظام کو آن لائن کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ ایف آئی اے میں نئے ڈی جی کی تعیناتی کر لی گئی ہے۔ایف آئی اے کو عوام دوست ادارہ بنایا جائے گا، ایک سوال کے جواب میں وزیر داخلہ نے کہا کہ مسئلہ اچھے اور برے طالبان کا نہیں۔ہماری لائن بڑی واضح ہے وہ آئین و قانون کی بالادستی ہے۔جو پر امن جمہوریت اور قانون اور آئین کی بالادستی پر یقین رکھتا ہے اس کو آئین پاکستان ہر طرح کا حق دیتا ہے۔نئی سیاسی جماعتوں کی رجسٹریشن الیکشن کمیشن کرتا ہے جو آئین اور قانون کو ہاتھ میں لے گا اس سے ہماری لڑائی ہے ۔

وزیرداخلہ

مزید : علاقائی