شاہد خاقان عباسی نواز شریف سے ملاقات ، حکومت جمہوری بالادستی ، قانون کی حکمرانی پر یقین رکھتی ہے : وزیر اعظم

شاہد خاقان عباسی نواز شریف سے ملاقات ، حکومت جمہوری بالادستی ، قانون کی ...

  

لاہور، اسلام آباد(جنرل رپورٹر،نیوز ایجنسیاں) وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی اور سابق وزیر اعظم محمد نواز شریف کے درمیان جاتی امراء رائے ونڈ میں ملاقات ہوئی ۔ اس موقع پر وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف ، وفاقی وزیر خزانہ اسحق ڈار اور دیگر بھی موجود تھے ۔ اس موقع پر قومی نوعیت کے اہم معاملات سمیت ملک کی مجموعی صورتحال پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا ۔ملاقات میں حکومت کی طرف سے عوام کے مفاد میں جاری ترقیاتی پروگرام کو آگے بڑھانے کے حوالے سے بھی تبادلہ خیال کیا گیا ۔ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے مختلف جماعتوں کے اراکین اور پارٹی ممبران سے ہونے والی ملاقات کے حوالے سے بھی آگاہ کیا ۔ سابق وزیر اعظم نواز شریف کی طرف سے وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی اور دیگر کو ظہرانہ بھی دیا گیا ۔قبل ازیں وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی خصوصی طیارے کے ذریعے لاہور پہنچے تو وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے چیف سیکرٹری پنجاب کیپٹن (ر) زاہد سعید ،انسپکٹر جنرل پولیس کیپٹن (ر) عارف نواز،کمشنر لاہور ڈویژن عبد اللہ خان سنبل،ڈی آئی جی آپریشنز ڈاکٹر حیدر اشرف اور دیگر اعلیٰ حکام کے ہمراہ ان کا استقبال کیا ۔دوسری طرف وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ محمد نواز شریف کی قیادت میں ن لیگی حکومت نے ملک کو ٹریک پر ڈال کر ترقی کی راہ ہموار کی اور ہم ان کی حکمت عملی کے تحت ہی ملک کو ترقی و خوشحالی کا گہوارہ بناکر ہی دم لیں گے انہوں نے ن لیگ کے سینٹرز سے ملاقات کے دوران گفتگو میں کیا کہ حکومت قانون کی حکمرانی ،جمہوری تصورات کی بالا دستی اور اداروں کے استحکا م پر پختہ یقین رکھتی ہے۔ وہ ملاقات کرنیوالے پارٹی سینیٹرز سے گفتگو کررہے تھے ۔جن میں سینیٹ میں قائد ایوان راجہ محمد ظفر الحق، وزیر موسمیاتی تبدیلی مشاہد اللہ خان، وزیر برائے انسداد منشیات لیفٹیننٹ جنرل (ر) صلاح الدین ترمذی، وزیر شماریات کامران مائیکل، وزیراعظم کے معاون خصوصی آصف سعید کرمانی، چوہدری تنویر، غوث محمد خان نیازی، مسٹر حمزہ ، لیفٹیننٹ جنرل (ر) عبدالقیوم، نثار محمد، پرویز رشید، سلیم ضیاء ، سردار محمد یعقوب خان ناصر ، سعود مجید ، آغاز شاہ زیب درانی، محمد جاوید عباسی، عائشہ رضا فاروق ، کلثوم پروین ، نجمہ حمید، نزہت صادق اور راحیلہ مگسی شامل تھے۔وزیراعظم نے کہاکہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے گزشتہ چار برسوں کے دوران ملک کو درپیش چیلنجوں سے نکالنے کیلئے اہم کردار ادا کیا ہے، میاں نواز شریف کی قیادت میں مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے معیشت سے لیکر امن و امان کی ابتر صورتحال تک کے چیلنجوں سے مؤثر طور پر نبردآزما ہوتے ہوئے ملک کو واپس پٹڑی پر ڈالا ہے اور ترقی و خوشحالی کے سفر پر گامزن کیا ہے۔ وزیر اعظم نے سکیورٹی، معیشت اور ترقی سے متعلق مختلف پالیسی اقدامات پر گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ موجودہ حکومت کی کارکردگی گزشتہ حکومتوں سے بہتر ہے۔ حکومت نے اشد درکار ترقیاتی منصوبوں پر توجہ مرکوز کی جن سے عوام کی ضروریات پوری ہوئیں اور ان منصوبوں کی بروقت تکمیل کو یقینی بنایا ۔وزیراعظم نے اس امر پرزور دیاکہ حکومتی پالیسیوں سے بین الاقوامی سطح پر ہمارا مثبت تشخص بھی اجاگر ہوا اور بین الاقوامی برادری بالخصوصی غیر ملکی سرمایہ کاروں کا اعتماد بحال ہوا، ممتاز بین الاقوامی اداروں نے اس کا اعتراف بھی کیا ہے۔ وزیر اعظم نے کہاکہ ہم نے کرپشن سے پاک حکومت کا تصور دیا ہے اور درحقیقت یہ ہم سب کے لئے نہایت فخر کی بات ہے کہ گزشتہ چار برسوں کے دوران ترقیاتی منصوبوں میں بدعنوانی کا ایک کیس بھی سامنے نہیں آیا۔ وزیر اعظم نے بالخصوص معیشت ، بجلی کے شعبہ ، مختلف ترقیاتی منصوبوں کی بروقت تکمیل اور داخلی سلامتی کو یقینی بنانے کے شعبہ جات میں حاصل ہونے والی کامیابیوں کو اجاگر کیا۔انہوں نے کہاکہ مسلم لیگ (ن) کی حکومت قانون کی حکمرانی جمہوری تصورات کی بالا دستی اور اداروں کے استحکا م پر پختہ یقین رکھتی ہے۔ ارکان پارلیمنٹ کے روبرو حقیقی چیلنج گزشتہ چار برسوں کے دوران حاصل ہونے والے فوائد کو تقویت دینا ہے۔

شاہد خاقان عباسی

اسلام آباد ،واشنگٹن (صباح نیوز)وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سے چیئرمین جوائنٹ چیف آف سٹاف کمیٹی جنرل زبیر محمود حیات نے ملاقات کی، ملاقا ت میں وزیراعظم کا کہنا تھاکہ ہم نے بد عنوانی سے پاک حکومت کاتصور دیا ہے،بدعنوانی سے پاک ترقیاتی منصوبے ترجیح ہیں۔ترجمان وزیر اعظم ہاوس کے مطابق منگل کو چیئرمین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف کمیٹی جنرل زبیر محمود حیات سے ملاقات میں دونوں رہنماوں نے پاک فوج کے پیشہ وارانہ امورپر بات چیت کی۔علاوہ ازیں امریکی وزیر خارجہ نے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سے ٹیلی فون پر رابطہ کیا ہے۔ریکس ٹلرسن نے ٹیلی فونک گفتگو میں علاقائی سلامتی سمیت دیگر اہم امور پر تبادلہ خیال کیا۔

ملاقاتیں ،ٹیلیفو

مزید :

صفحہ اول -