دیواریں گرنے ،کرنٹ لگنے سے مرنے والوں کی تعداد 11ہو گئی

دیواریں گرنے ،کرنٹ لگنے سے مرنے والوں کی تعداد 11ہو گئی

  

ٍٍٍٍکراچی(آن لائن )کراچی میں بارش کا سلسلہ دوسرے روز بھی جاری رہا ،پیر اور منگل کی درمیانی شب کراچی میں آندھی اور طوفانی بارش کے بعد شہرکے متعدد علاقے زیرآب اور کئی علاقوں میں بجلی غائب ہو گئی جبکہ کرنٹ لگنے اور چھت گرنے کے واقعات میں کم سن بہن بھائی سمیت 11 افراد جاں بحق ہوگئے،تیز ہواؤں کے باعث طوفانی بارش سے کورنگی اور لانڈھی سمیت مضافاتی علاقوں میں گھروں کی چھتیں اْڑ گئیں۔۔کراچی کے مختلف علاقوں میں تیز ہوا کے ساتھ موسلا دھار بارش ہوئی جس سے شہر میں چند روز سے جاری گرمی کا زور ٹوٹ گیا۔ شاہ فیصل ٹاؤن، گلستان جوہر، فیڈرل بی ایریا، ملیر، ایئر پورٹ، یونی ورسٹی روڈ، گلشن حدید، گلشن اقبال، شارع قائدین، پٹیل پاڑہ اور دیگر علاقوں میں طوفانی بارش ہوئی ۔بارش کا یہ سلسلہ منگل کے روز بھی جاری رہا اور شارع فیصل، ایم اے جناح روڈ اور دیگر اہم شاہراہوں پر بارش کی وجہ سے ٹریفک کا نظام درہم برہم ہوگیا، کئی گاڑیاں اور موٹر سائیکلیں خراب ہوگئیں اور شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔شہر میں بارش کا پانی مختلف سڑکوں پر جمع ہونے کے باعث جگہ جگہ ٹریفک کی روانی متاثر ہوئی جب کہ کئی علاقوں میں ٹریفک بھی جام ہوگیا، بفرزون، گولیمار، لسبیلہ، اولڈ سٹی ایریا ، گلشن اقبال ، گلشن اقبال،: ایف بی ایریا میں بجلی کی فراہمی تاحال بحال نہیں ہوسکی جبکہ بارش شروع ہوتے ہی بجلی بھی غائب ہوگئی اور کراچی کے اکثر علاقے تاحال بجلی کی فراہمی سے محروم ہیں ۔تفصیلات کے مطابق پیر اور منگل کی درمیانی شب پہلے گرد آلود تیز آندھی چلی اور پھر اچانک موسلا دھار بارش نے لانڈھی، کورنگی، ملیر ہالٹ، گلستان جوہر، گلشن اقبال، فیڈرل بی ایریا، نیو کراچی، نارتھ کراچی، نارتھ ناظم آباد، ناظم آباد، لیاقت آباد، مارٹن کوارٹرز، جہانگیر روڈ، جمشید روڈ،لسبیلہ، نشتر روڈ، گارڈن، گرومندر، نمائش، صدر، لیاری، کورنگی، کھارا دار، میٹھا در سمیت شہر کے بیشتر علاقوں میں جل تھل کر دیا۔جبکہ بارش کی چند بوندیں گرتے ہی شہر کے300 فیڈر ٹرپ کر گئے،پی ایم ٹیز پھٹنے اور دیگر فنی خرابیوں کے باعث شہر کے کئی علاقوں میں بجلی کی فراہمی بھی معطل ہوگئی اور بجلی کی فراہمی معطل ہونے سے کراچی کا بڑا حصہ تاریکی میں ڈوب گیا۔ بجلی کی فراہمی معطل ہونے کے باعث کراچی ایئرپورٹ پر فلائٹ آپریشن بھی متاثر ہوا اور مسقط اور دبئی سے جناح انٹرنیشنل ایئرپورٹ آنے والی پروازوں کو نوابشاہ ایئرپورٹ پر لینڈ کرایا گیا۔کے الیکٹرک ترجمان کا کہنا ہے کہ طوفانی بارش سے سیکڑوں مقامات پر بجلی کے تار ٹوٹ گئے تاہم عملہ علاقوں میں موجود ہے اور وہ بجلی کی بحالی میں مصروف ہے۔دوسری جانب محکمہ موسمیات کے مطابق آئندہ 24 گھنٹوں کے دوران شہر کے مختلف علاقوں میں وقفے وقفے سے ہلکی بارش کا امکان ہے۔ محکمہ موسمیات کے مطابق شہر قائد میں 2 روز سے جاری گرمی سمندر میں موجود ہوا کے کم دباؤ کی وجہ سے ہے، دباؤ کم ہونے کے باعث سمندری ہواؤں کی رفتار بھی کم ہوگئی تاہم بھارتی گجرات میں موجود ہوا کے کم دباؤ کے اثرات بارش کی شکل میں کراچی پہنچ گئے ہیں۔ڈائریکٹرمحکمہ موسمیات کے مطابق کراچی میں بارش کا یہ سلسلہ بدھ تک جاری رہنے کا امکان ہے اور اس دوران شہر بھر میں کہیں ہلکی اور کہیں تیز بارش ہوسکتی ہے۔محکمہ موسمیات کے مطابق کراچی میں گزشتہ پیر اور منگل کی درمیانی شب سب سے زیادہ بارش لانڈھی میں لانڈھی 37 ملی میٹر ریکارڈ کی گئی، اس کے علاوہ گلشن حدید 32، ناظم آباد31، پی اے ایف فیصل بیس 29، پی اے ایف مسرور26، ماڈل آبزرویٹری اور کراچی ائیرپورٹ میں 12 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔ بارش کا سلسلہ مزید 24 گھنٹے جاری رہ سکتا ہے،دوسری جانب حکومت خواب غفلت کے مزے لے رہی ہے اور شہری انتظامیہ کا بھی کوئی نام ونشان تک نہیں ہے ،شہر کے اکثر علاقے اب بھی تالاب کا منظر پیش کررہے ہیں اور سڑکوں پر پانی جمع ہے ،جس کے باعث ٹریفک کے معمولات شدید متاثر ہیں ،لیکن ابھی تک پانی نکالنے کے حوالے سے کوئی ٹھوس اقدامات نہیں کئے گئے ہیں ،اگر فوری بنیادوں پر پانی سڑکوں سے نہ ہٹایاگیا تو مزید حادثات کا اندیشہ ہے ۔واضح رہے کہ پیر اور منگل کی درمیانی شب شروع ہونے والی بارش کے دوران کرنٹ لگنے سے رضویہ سوسائٹی میں 18 سالہ رمیز، پاک کالونی کے علاقے پرانا گولیمار باری ولیج میں پانی میں کرنٹ پھیلنے سے 18 سالہ بسمہ جاں بحق ہو گئی جب کہ سولجر بازار کے علاقے قادری چوک گارڈن ایسٹ میں کرنٹ لگنے سے حارث اور منصور نامی 2 افراد جاں بحق ہوئے جن کی لاشیں ایک گھنٹے تک جائے وقوع پر پڑی رہیں۔نارتھ کراچی انڈہ موڑ کے قریب کرنٹ لگنے سے 18 سالہ مریم جاں بحق جبکہ نارتھ کراچی ڈسکو موڑ کے قریب مکان کی چھت گرنے سے کمسن بہن مریم اور جنید بھائی جاں بحق ہوگئے۔ گلشن کنیز فاطمہ میں گھر کی دیوار گرنے سے ایک شخص جاں بحق ہوا، سپرہائی وے فقیرا گوٹھ میں 28 سالہ حاجرہ بی بی جبکہ نیو کراچی میں کرنٹ لگنے سے نامعلوم شخص جاں بحق ہوا۔ نیوکراچی خمیسو گوٹھ میں کرنٹ لگنے سے معاذ اللہ جاں بحق ہو گیا۔گارڈن کے علاقے میں واقع چاندنی چوک پر بجلی کے تار پانی میں گرنے سے کرنٹ لگنے کے باعث 2 افراد جاں بحق ہوئے جنہیں نکالنے کے لئے امدادی رضاکار موقع پر پہنچے لیکن پانی میں کرنٹ ہونے کے باعث امدادی ٹیمیں لاشیں نکالنے میں ناکام رہیں۔

کراچی ؍ جاں بحق

مزید :

کراچی صفحہ اول -