اسفند یار اور حیدر ہوتی کی بیگم نسیم ولی سے ملاقات ،اختلافات ختم

اسفند یار اور حیدر ہوتی کی بیگم نسیم ولی سے ملاقات ،اختلافات ختم

  

چارسدہ (بیورو رپورٹ) اسفندیار ولی خان اور امیر حیدر خان ہوتی بیگم نسیم ولی خان کے پاس پہنچ گئے۔ گلے شکوے دور ۔ اختلافات ختم ۔ اے این ولی کو اے این پی میں ضم کیا جائیگا۔ فریدطوفان آوٹ ۔ تفصیلات کے مطابق عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیار ولی خان ، سابق وزیر اعلی امیر حید رخان ہوتی ، ایمل ولی خان اور خاندان کے دیگر افراد نے ولی باغ جا کر اے این پی ولی کے سربراہ بیگم نسیم ولی خان سے ملاقات کی ۔ اس موقع پر خاندان کے دیگر افراد بھی موجود تھے ۔ ملاقات کے دوران خاندان کے افراد کی موجودگی میں بیگم نسیم ولی خان اور اسفندیار ولی خان کے مابین تمام گلے شکوے ختم کئے گئے ۔اسفندیا ر ولی خان ، امیر حیدر خان ہوتی ، ایمل ولی خان اور دیگر نے بیگم نسیم ولی خان کی طرف سے دئیے گئے ظہرانے میں بھی شرکت کی ۔ ذرائع کے مطابق اے این پی ولی کو اے این پی میں ضم کیا جائیگامگر فرید طوفان کو اے این پی میں شامل نہیں کیا جائیگا۔ یاد رہے کہ اے این پی کے پالیسیوں سے اختلاف کی وجہ سے بیگم نسیم ولی خان نے 2014میں اے این پی ولی کے نام سے اپنی علیحدہ پارٹی بنائی تھی ۔ راضی نامہ اور اختلافات ختم کرنے کے حوالے سے اے این پی بلو چستان کے قائدین سمیت جے یوآئی کے مولانا شیرانی اور بلور برادران پہلے بھی کئی مرتبہ کو شش کر چکے ہیں مگر بعد ازاں خاندان کے چھوٹوں نے باہمی مشاورت سے بڑوں کے سامنے لکیر کھینچ کر راضی نامہ کیلئے راستہ ہموار کیا ۔راضی نامہ کے حوالے سے فرید طوفان سے رابطہ کیا گیا مگر موصوف سے رابطہ نہ ہو سکا۔

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے ولی باغ میں مرکزی صدر اسفندیار ولی خان اور بیگم نسیم ولی خان کے درمیان ہونے والے فیصلے کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے اسے نیک شگون قرار دیا ہے ، اپنے تہنیتی بیان میں انہوں نے کہا کہ آج انتہائی خوشی کا مقام ہے کہ باچا خان بابا اور ولی خان بابا کا گھرانہ ایک ہوگیا ہے اور اب سرخ جھنڈے تلے متحد ہو کر پختونوں کے حقوق کی جدوجہد کی جائے گی ،البتہ انہوں نے فیصلے کے حوالے سے وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ اسفندیار ولی خان اور بیگم نسیم ولی خان کے درمیان ہونے والے فیصلے کے مطابق فرید طوفان اس فیصلے کا حصہ نہیں ہونگے

مزید :

کراچی صفحہ اول -