نواز شریف کی زیر صدارت جاتی امرا میں اجلاس ، آئین کے آرٹیکل 62 ون ایف میں ترمیم کا فیصلہ

نواز شریف کی زیر صدارت جاتی امرا میں اجلاس ، آئین کے آرٹیکل 62 ون ایف میں ترمیم ...
نواز شریف کی زیر صدارت جاتی امرا میں اجلاس ، آئین کے آرٹیکل 62 ون ایف میں ترمیم کا فیصلہ

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) سابق وزیر اعظم نواز شریف کی زیر صدارت جاتی امرا میں ہونے والے اجلاس میں آئین کے آرٹیکل 62/63 میں ترمیم پر مشاورت کی جا رہی ہے، ذرائع کا کہنا ہے کہ حکومت آرٹیکل کی اسلامی شقوں کو نہیں چھیڑے گی بلکہ صرف نا اہلی کے معاملے میں ترمیم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

ذرائع کے مطابق سابق وزیر اعظم نواز شریف کی زیر صدارت مسلم لیگ ن کی اعلیٰ قیادت کا جاتی امرا میں اجلاس جاری ہے جس میں رانا ثنا اللہ، خواجہ سعد رفیق، سردار ایاز صادق، زاہد حامد، شہباز شریف اور گورنر سندھ محمد زبیر سمیت دیگر شریک ہیں۔ اجلاس میں آئین کے آرٹیکل 62/63 میں ترمیم پر مشاورت کی جا رہی ہے، قانونی ماہرین نے اجلاس کو ترمیم پر قانونی پہلوﺅں سے بریفنگ بھی دی ہے۔

یہ بھی پڑھیں: وزیراعظم شاہد خاقان عباسی جدہ پہنچ گئے، ڈپٹی گورنر مکہ نے استقبال کیا

ذرائع کا کہنا ہے کہ شرکا نے اس بات پر اتفاق کیا ہے کہ آئین کے آرٹیکل 62/63 کی اسلامی روح کو نہیں چھیڑا جائے گا بلکہ صرف نا اہلی والی شق 62 ون ایف میں ترمیم کی جائے گی ۔ مسلم لیگ ن کا موقف ہے کہ مذکورہ آرٹیکل میں ترمیم کے بعد آئین میں موجود نا اہلی کا ابہام دور ہو جائے گا۔

واضح رہے کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف کو سپریم کورٹ نے پاناما کیس میں آئین کے آرٹیکل کی شق 62 ون ایف کے تحت نا اہل قرار دیا ہے ، آئین میں مدت کا ذکر نہ ہونے کے باعث سابق وزیر اعظم کی نا اہلی کو تاحیات نا اہلی سے تعبیر کیا جا رہا ہے۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -