سابق سی آئی اے ایجنٹ نے ٹرمپ کوٹوئٹر سے دور رکھنے کے لئے، ٹوئٹر خریدنے کی مہم شروع کردی

سابق سی آئی اے ایجنٹ نے ٹرمپ کوٹوئٹر سے دور رکھنے کے لئے، ٹوئٹر خریدنے کی مہم ...
سابق سی آئی اے ایجنٹ نے ٹرمپ کوٹوئٹر سے دور رکھنے کے لئے، ٹوئٹر خریدنے کی مہم شروع کردی

  

واشنگٹن(ڈیلی پاکستان آن لائن)امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر کو مسلسل استعمال کرتے ہیں اور آئے روز نت نئے شگوفے اس ویب سائٹ پر امریکی صدر کی جانب سے چھوڑے جاتے ہیں۔ڈونلڈ ٹرمپ کی اس عادت سے جہاں دنیا بھر کے ٹوئٹر صارفین نالاں ہیں وہیں امریکی شہری بھی ان کی اس عادت سے بیزار دکھائی دیتے ہیں ۔ ان حالات میں امریکی خفیہ ادارے کے سابق انڈر کوور ایجنٹ نے ٹرمپ کے ٹوئٹ سے نجات حاصل کرنے کا ایک نیا طریقہ ڈھونڈ لیا ہے۔سابق سی آئی اے ایجنٹ ویلری پام ویلسن نے سوشل میڈیا پر ٹوئٹر کو خریدنے کی مہم شروع کردی ہے تاکہ ٹرمپ اسے استعمال نہ کرسکیں۔

ٹرمپ اس خام خیالی میں نہ رہیں کہ وہ پاکستان کے بغیر افغانستان میں جنگ جیت سکتے ہیں : خواتین ممبران قومی اسمبلی

فرانسیسی خبررساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کے مطابق ویلری پام نے گزشتہ ہفتے ایک مہم شروع کی جس میں انہوں BuyTwitter اورBanTrump کے ہیش ٹیک کو استعمال کرتے ہوئے ٹوئٹ کیا کہ اگر ڈونلڈ ٹرمپ اپنی احمقانہ حرکتوں سے باز نہیں آتے تو یہ ہمارے لئے خطرناک ہے،امریکی صدر کے ٹوئٹس اور پالیسیاں ہمیں تباہی کی جانب دھکیل رہی ہیں اور وہ ہمارے ملک اور لوگوں کے لئے خطرناک ثابت ہوسکتے ہیں اس لئے لوگ ٹوئٹر کو خریدنے کے لئے مجھے زیادہ سے زیادہ رقم دیں۔سی آئی اے ایجنٹ نے 6ہزار ڈالر اس مہم کے دوران جمع کر لئے ہیں تاہم انہیں مزید کروڑوں ڈالر درکار ہیں۔

سی آئی اے ایجنٹ کی مہم کے جواب میں وائٹ ہاﺅس کی ترجمان کا کہنا تھا کہ اس مہم میں کم لوگوں کی جانب سے پیسے دینے سے یہ بات ظاہر ہے کہ امریکی لوگ ڈونلڈ ٹرمپ اور ان کے ٹوئٹس کو پسند کرتے ہیں۔ تاہم ٹوئٹر انتظامیہ نے اس حوالے سے فی الحال کوئی جواب نہیں دیا ہے۔

مزید : بین الاقوامی