مجلس احرار کشمیری بھائیوں کے شانہ بشانہ کھڑی ہے، مولانا زاہد الراشدی

مجلس احرار کشمیری بھائیوں کے شانہ بشانہ کھڑی ہے، مولانا زاہد الراشدی

  

لاہور(نمائندہ خصوصی)کشمیری عوام کی جدوجہدکی حمایت سب سے پہلے سید عطاء اللہ شاہ بخاری اورمجلس احراراسلام نے کی تھی جب وہ1931ء میں ڈوگرہ راج کے مظالم کیخلاف اٹھ کھڑے ہوئے تھے اور یہ حمایت آج بھی جاری ہے،یہ بات پاکستان شریعت کونسل کے سیکرٹری جنرل مولانا زاہدالراشدی نے ”یوم امیر شریعت “کے موقع پر جامعہ اسلامیہ محمدیہ فیصل آباد میں ایک اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔انہوں نے کہاکہ کشمیری عوام کی آزادی کی جدوجہد گزشتہ نوے برس سے جاری ہے اور 1931ء کی تحریک کشمیر میں سید عطاء اللہ شاہ بخاری ؒ اوران کے رفقاء کی محنت سے مجلس احراراسلام کے پلیٹ فارم پر تیس ہزار سے زیادہ لوگوں نے کشمیر کی حمایت میں گرفتاریاں پیش کیں جو کشمیرکی تاریخ اورتحریک کا ایک روشن باب ہے۔

۔انہوننے کہاکہ سید عطاء اللہ شاہ بخاری ؒ نے کشمیر کیخلاف قادیانی گروہ کے سربراہ مرزابشیرالدین محمود کی اس سازش کو بھی ناکام بنادیا تھا۔

جو اس نے اس دور میں اپنی سربراہی میں کشمیر کمیٹی قائم کرکے مفکر پاکستان علامہ محمد اقبال ؒ کو اس کارکن بناکر کشمیر کے معاملات کو اپنے ہاتھ میں لینے کے لیے کی تھی مگر علامہ محمد اقبال ؒ نے کشمیر کمیٹی سے لاتعلقی کا اعلان کرکے قادیانیوں کی اس سازش کو ناکام بنادیاجو امیر شریعت سید عطاء اللہ شاہ بخاری اور ان کے رفقاء کی محنت کا نتیجہ تھا،اس موقع پر علامہ محمداقبال ؒ نے نہ صرف کشمیر کمیٹی کے غبارے سے ہوا نکال دی تھی بلکہ قادیانیوں کے کفر اور اسلام کے خلاف ان کی سازشوں کو طشت ازبام کردیاتھا، انہوں نے کہاکہ قیام پاکستان کے بعد بھارتی جارحیت کے خطرہ کے پیش نظر ”دفاع پاکستان“کے عنوان سے عوامی کانفرنس کرکے مجلس احراراسلام اور امیرشریعت نے پاکستان کی سرحدوں کی حفاظت کے لیے عوام کو بیدار کیااور قوم کو دفاع وطن کے لیے تیارکیا۔مولانازاہدالراشدی نے کہاکہ کشمیر ی عوام کی حمایت،قادیانیت کے تعاقب اور پاکستان کے دفاع واستحکام کی جدوجہد حضرت امیر شریعت کا ورثہ ہے جس کا تسلسل جاری رکھنا ہم سب کی ذمہ داری ہے۔پاکستان شریعت کونسل کے مرکزی نائب امیر اور جامعہ اسلامیہ محمدیہ فیصل آباد کے مہتم عبدالرزاق نے اس نشست کی صدارت کی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -