سینیٹ قائمہ کمیٹی، وزارت دفاعی پیداوار کی 20سالہ ایکسپورٹ کاکردگی تفصیلات طلب

سینیٹ قائمہ کمیٹی، وزارت دفاعی پیداوار کی 20سالہ ایکسپورٹ کاکردگی تفصیلات ...

  

اسلام آباد(آئی این پی)سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے دفاعی پیداوار نے بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کی شدید مذمت کی ہے، جبکہ وزارت دفاعی پیداوار حکام نے کمیٹی کو آگاہ کیا ہے پاکستان کی افواج دفاعی طور پر خود کفیل ہیں، اگر جنگ کی صورت حال پیدا ہوئی تو ہمیں دائیں بائیں کسی کی طرف نہیں دیکھنا پڑے گا۔کمیٹی نے 20سال میں وزارت دفاعی پیداوار کے تمام اداروں کی ایکسپورٹ کی کارکردگی کی تفصیلات طلب کرلیں۔جمعرات کو سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے دفاعی پیداوار کااجلاس چیئرمین سینیٹر لیفٹیننٹ جنرل(ر) عبدالقیوم کی صدارت میں ہوا،اجلاس کے دوران سیکرٹری اور وزیر دفاعی پیداوار کی عدم موجودگی کا نوٹس لیتے ہوئے چیئرمین کمیٹی نے کہا کہ سیکرٹری اور وزیر کو یہاں موجود ہونا چاہیئے تھا یہ ایوان بالا کی کمیٹی ہے،اجلاس کے دوران ڈیفنس ایکسپورٹ پروموشن آرگنائزیشن(ڈیپو) حکام نے کمیٹی کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ ہم بین الاقوامی ڈیفنس ایگزیبیشنز میں حصہ لیتے ہیں اور پاکستان پویلین بناتے ہیں،سال 2019 میں روس اور ترکی میں پاکستان پویلین بنا تھا،ہمارا کام دفاعی صنعت کی بیرون ملک پروموشن کا ہے،2019-20 میں ہمارا بجٹ 15.5 ملین مختص ہے، اس موقع پر چیئرمین کمیٹی سینیٹر عبدالقیوم نے کہاکہ 20 سال میں وزارت دفاعی پیداوار کے تمام اداروں کی ایکسپورٹ کی کاکردگی کیا رہی اس حوالے سے کمیٹی کو تفصیلات فراہم کی جائیں، رکن کمیٹی سینیٹر پرویز رشید نے ڈیفنس ایکسپورٹ پروموشن آرگنائزیشن کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اس ادارے کا ہونا بہت ضروری ہے، اس ادارے کو قائم رہنا چاہیئے، چیئرمین کمیٹی نے کہا کہ بھارت نے مقبوضہ کشمیر کے حوالے سے جو قدم اٹھایا ہے ہم اس کی مذمت کرتے ہیں،رکن کمیٹی سینیٹر عبدالغفور حیدری نے کہا کہ اس وقت جنگ کے بادل منڈلا رہے ہیں،اگر مودی کوئی حماقت کرتا ہے اور اگر جنگ ہوجاتی ہے تو ہماری پوزیشن کیا ہے؟ کیا ہم خود کفیل ہیں؟وزارت دفاعی پیداوار حکام نے کہا کہ پاکستان کی افواج دفاعی طور پر خود کفیل ہیں، اگر اس طرح کی کوئی صورت حال پیدا ہوئی تو ہمیں دائیں بائیں کسی کی طرف نہیں دیکھنا پڑے گا۔

سینیٹ قائمہ کمیٹی

مزید :

صفحہ آخر -