کراچی میں صفائی پر اجلاس،وزیر اعلیٰ کی2دن میں سڑکوں، گلیوں سے نکاسی آب کی ہدایت

کراچی میں صفائی پر اجلاس،وزیر اعلیٰ کی2دن میں سڑکوں، گلیوں سے نکاسی آب کی ...
کراچی میں صفائی پر اجلاس،وزیر اعلیٰ کی2دن میں سڑکوں، گلیوں سے نکاسی آب کی ہدایت

  


کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی زیر صدارت کراچی میں صفائی  کے حوالے سے ایک  اہم اجلاس منعقد ہوا، جس میں وزیر اعلیٰ سندھ نے لوکل باڈیز، ضلعی انتظامیہ کو 2دن میں شہر کی تمام سڑکوں، گلیوں سے نکاسی آب اور رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی،اجلاس میں تمام سٹیک ہولڈرز،صوبائی وزیربلدیات ناصر شاہ، وزیرکچی آبادی مرتضیٰ بلوچ ،صوبائی مشیر مرتضیٰ وہاب ،میئر کراچی  وسیم  اختر، وزیراعلیٰ سندھ کے پرنسپل سیکریٹری ساجد جمال ابڑو ، کمشنر کراچی  افتخار شہلوانی ، سیکریٹری  خزانہ نجم شاہ، سیکریٹری لوکل گورنمنٹ  خالد حیدر شاہ و دیگر نے شرکت کی۔

مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ دوسرا ٹاسک کراچی شہر کے سیوریج کے  نظام کو بہتر  بنایا جائیگا تاکہ شہر میں  نکاسی کے نظام میں بہتری لائی جاسکے جبکہ تیسرا ٹاسک یہ ہوگا کہ محرم الحرام کے دوران  جلوس اور مجالس  کے  راستوں اور سڑکوں کی استرکاری اور مرمت اور صفائی ستھرائی کو یقینی بنایا جائے گا۔ انہوں نے صوبائی وزیر بلدیات کو ہدایت کی کہ وہ ہر15دن کے بعد کوآرڈینیشن کے حوالے سے تمام منتخب نمائندوں بشمول میئر، ڈی ایم سیز کے چیئرمینز، ڈسٹرکٹ کونسلز کے چیئرمین، ایس بی سی اے، سندھ سالڈ ویسٹ مینجمنٹ  اور کنٹونمنٹ بورڈ  کے نمائندوں کے ساتھ اجلاس منعقد کریں  اور ان کے متعلقہ اداروں سے متعلق مسائل سنیں، باہمی طریقے سے حل کریں۔ انہوں نے کہا کہ اس شہر کے لوگوں کو فوری طورپر ریلیف فراہم کرنے کیلئے گلیوں اور سڑکوں سے بارش اور سیوریج کے پانی کی  ترجیحی بنیادوں پر نکاسی کی جانی چاہئے۔ ڈی ایم سیز کے چیئرمینوں نے واضح کیا کہ ان کے پاس فنڈز کی قلت ہے لہٰذا  تمام ڈی ایم سیزکی ترقیاتی کاموں اور تنخواہوں یا پینشنز کے واجبات ہیں اس پر وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ صوبائی حکومت کو بھی وفاقی منتقلیوں میں کمی کے باعث مالی مشکلات کا سامنا ہے،لوکل باڈیز کو چاہیے کہ وہ اپنے ذرائع پیدا کریں اور اپنے غیر ترقیاتی اخراجات کو مطلوبہ مالی مینجمنٹ  کے ساتھ کم کریں۔

انہوں نے شہر میں گاربیچ ٹرانسفرسٹیشن قائم کرنے، میئر کراچی اور ڈی ایم سیز کو شہر میں فیومیگیشن شروع کرنے کی ہدایت کی جس پر میئر کراچی وسیم اختر نے کہا کہ انہوں نے ڈی ایم سیز کو  فیومیگیشن کے لیے 48گاڑیاں دی ہوئی ہیں۔ دریں اثنا وزیراعلیٰ سندھ کی زیر صدات سیف سٹی پروجیکٹ  کے حوالے سے ایک اہم  اجلاس وزیراعلیٰ ہاؤس میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں چیف سیکریٹری سندھ ممتاز شاہ، وزیرانفارمیشن ٹیکنالوجی تیمور تالپور، آئی جی کلیم امام  و دیگر نے شرکت کی۔ ایڈیشنل آئی جی کراچی غلام نبی میمن اور دیگر متعلقہ افسران نے شرکت کی۔اجلاس میں محکمہ پولیس نے وزیراعلیٰ سندھ کو 10000 کیمرے نصب کرنے کے حوالے سے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ دس ہزار کیمرے لگانے کا کام شروع کرنے کیلئے مکمل تیاری عمل لائی جا چکی ہے۔ کیمروں کی تفصیلات کی فنی تشخیص کرانا باقی ہے۔ وزیراعلیٰ سندھ نے آئی جی پولیس کو15دن کا وقت دیتے ہوئے کہا کہ اس پروجیکٹ کے تمام فنی پہلوؤں کو حتمی شکل دی جائے۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی


loading...