وزیراعظم ملک میں سیاسی انتشار کو ہوا  دینے کی کوشش کررہے ہیں‘ نعیم بھابھہ

وزیراعظم ملک میں سیاسی انتشار کو ہوا  دینے کی کوشش کررہے ہیں‘ نعیم بھابھہ

  

وہاڑی(بیورورپورٹ،نامہ نگار) سابق صوبائی وزیرزراعت نعیم خان بھابھہ نے کہاہے کہ ہونے والی وفاقی کابینہ میٹنگ کی جوکہانی مختلف ذرائع سے گردش کررہی ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے اپوزیشن جماعتوں (بقیہ نمبر17صفحہ6پر)

سے کسی بھی قسم کے رابطہ کرنے پرسختی سے منع کردیاہے اگراس بات میں حقیقت ہے توبہت ہی خطرناک صورتحال ہے اس قسم کے فیصلے توآج تک کسی ڈکٹیٹرنے بھی نہیں کئے تھے۔وہ گزشتہ روزصحافیوں سے گفتگوکررہے تھے۔نعیم خان بھابھہ کاکہناتھاکہ کسی بھی ملک کی اپوزیشن جماعتیں حکومت کیلئے آئینہ کی حیثیت رکھتی ہیں اوراپوزیشن کی تنقیدسے حکومتیں اپنی کامیابی کاراستے متعین کرتی ہیں لیکن اس ملک کی بدقسمتی ہے کہ ملک کاوزیراعظم اس قسم کے فیصلے کرکے ملک میں سیاسی انتشارکوہوادینے کی کوششوں میں مصروف ہے ان کاکہناتھاکہ حکومت کی دوسالہ کارکردگی ایسی نہیں ہے کہ جس پرعوام کے سامنے حکومت فخرکرسکے اس کے باوجودوزیراعظم میں نہ مانوں کی پالیسی اختیارکئے ہوئے ہیں وزیراعظم کوچاروں طرف سے غیرمنتخب غیرسیاسی مشیروں نے گھیررکھاہے اوروہی ان سے ایسے فیصلے کراکے حکومت کوبندگلی میں دھکیل رہے ہیں ان کاکہناتھاکہ وزیراعظم ہروقت احتساب احتساب کرتے رہتے ہیں لیکن وہ یہ بھی توقوم کوبتائیں کہ اپنی صفوں میں گھسے بیٹھے کرپٹ ٹولہ کااحتساب کب کریں گے شوگراورآٹابحران کے ذمہ داروں کے خلاف کاروائی کرنے کے بجائے ان کے خلاف کاروائی ہونے پراپنے ایک ٹی وی انٹرویو میں دکھ اورافسوس کااظہارکرتے دکھائی دیتے ہیں انصاف کاتقاضہ تویہ ہے کہ وزیراعظم اپنے سمیت اپنے وزیروں اورمشیروں کوبھی احتساب کے کٹہرے میں کھڑاکرکے قوم کے سامنے سرخروہوں لیکن وہ توخودچوروں کے نرغہ میں ہیں وہ کیسے احتساب کیلئے خودکوپیش کرسکتے ہیں ان کاکہناتھاکہ دوسال میں حکومت نے عوام کومہنگائی اوربیروزگاری کے تحفے دیئے ہیں اوران تحفوں کی کارکردگی کی بنیادپرحکومت آئندہ الیکشن میں کامیابی کے خواب دیکھ رہی ہے لیکن خواب دیکھنے پرتوپابندی نہیں لگائی جاسکتی۔

سیاسی انتشار

مزید :

ملتان صفحہ آخر -