بارشوں سے تباہی حکومت کی نااہلی ہے،محمد حسین محنتی 

  بارشوں سے تباہی حکومت کی نااہلی ہے،محمد حسین محنتی 

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)جماعت اسلامی سندھ کے امیر وسابق ایم این اے محمد حسین محنتی نے مون سون کی حالیہ بارشوں کے نتیجے میں سندھ خاص طور پر کراچی میں بڑے پیمانے پر جانی ومالی نقصانات پر افسوس اور دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ کراچی کمیٹی کے باوجودشہرکی ابترصورتحال افسوس ناک ہے۔ ثابت ہوگیا کہ عدل وانصاف اوردیانتدار قیادت کے بغیر کراچی تاکشمور سندھ کی ترقی اورعوامی مسائل کا حل ناممکن ہے۔سندھ حکومت، پی ٹی آئی اور متحدہ کی تین رکنی کمیٹی قائم ہونے کے باوجود آج کراچی ڈوب رہا ہے اور کراچی کے شہریوں کا کوئی پرسان حال نہیں، ضلع وسطی، اورنگی ٹاؤن، سرجانی ٹاؤن اور ملیر کے رہائشی اور کاروباری علاقوں میں پانچ پانچ فٹ پانی کھڑا ہے گھروں اور دکانوں میں بارش اور نالوں کا پانی بھرجانے سے کروڑوں روپے کا مالی نقصان جبکہ کے الیکٹرک کی نااہلی کی وجہ سے کئی جانیں ضایع ہوچکی ہیں، لاہور کی مثال پیش کرنے والے کراچی کی صورتحال پر توجہ دیں۔ انہوں نے آج ایک بیان میں مزید کہا کہ جہاں ایک طرف گذشتہ بارہ سالہ دور حکومت میں پی پی نے صوبے کا بیڑہ غرق کردیا ہے وہاں دارلحکومت کراچی کو بھی کھنڈر ات میں تبدیل کردیا ہے، کراچی کی محبت میں وفاق کو طعنے دینے والے حالیہ بارشوں کے بعد کراچی کے عوام کو ڈوبنے اور مرنے کیلئے تنہا چھوڑدیا،پیپلزپارٹی کے وزراء پریس کانفرنسوں اور بیان بازی سے آگے بڑھ کر کراچی کے عوام کی خدمت اور انکے مالی اور جانی نقصانات کے ازالے کیلئے مؤثر اقدامات کریں،جمعہ21اگست کی طوفانی بارش سے کراچی کے عوام ڈوبتے رہے لیکن وزیراعلیٰ اور ان کی کابینہ ٹی وی پر بیٹھ کر تماشہ دیکھتی رہی، پیپلزپارٹی کی حکومت نے بارہ سالوں سے سندھ کے عوام کے دکھوں کا مداوا کرنے کی بجائے صوبے کو پتھر کے دور میں پہنچادیا ہے، عوام صحت، تعلیم،روزگار سمیت ہر قسم کی سہولیات سے مکمل طور پر محروم ہیں جبکہ حکمرانوں کی دولت میں اضافہ اور قومی خزانے کی لوٹ مار جاری ہے۔صوبائی امیر نے پرزور مطالبہ کیا کہ کراچی،حیدرآباد سمیت سندھ بھر کے تمام اضلاع میں حالیہ بارشوں سے ہونے والے مالی اور جانی نقصانات کا سروے کرکے متاثرہ افراد کی مالی امداد اور مؤثرحفاظتی تدابیر اختیار کی جائیں تاکہ آئندہ مون سون کی بارشوں سے عوام کو حالیہ پریشانی کی صورتحال سے دوچار نہ ہونا پڑے۔انہوں نے جماعت اسلامی اور الخدمت کے رضاکاروں پر بھی زور دیا کہ وہ بارش سے متاثرہ علاقوں میں اپنے بھائیوں کی ہر ممکن مدد کریں اور گھروں سے پانی نکالنے کیلئے دستیاب مشینری کو استعمال کرتے ہوئے لوگوں کو باہر نکالیں۔

مزید :

صفحہ اول -