سعودی وزارت تجارت نے انسداد تجارتی پردہ پوشی قانون کی خلاف ورزی کرنے والوں کو دی گئی مہلت میں 6ماہ کی توسیع کردی

سعودی وزارت تجارت نے انسداد تجارتی پردہ پوشی قانون کی خلاف ورزی کرنے والوں ...
سعودی وزارت تجارت نے انسداد تجارتی پردہ پوشی قانون کی خلاف ورزی کرنے والوں کو دی گئی مہلت میں 6ماہ کی توسیع کردی

  

جدہ (محمد اکرم اسد) سعودی وزارت تجارت نے انسداد تجارتی پردہ پوشی قانون کی خلاف ورزی کرنے والوں کو دی گئی مہلت میں چھ ماہ کی توسیع  کردی، اب سعودیوں کے نام سے کاروبار کرنے والے غیر ملکی 16 فروری 2022  تک اپنے معاملات درست کر سکیں گے۔

سعودی پریس ایجنسی (ایس پی اے) کے مطابق وزارت تجارت نے بیان میں کہا کہ ’مہلت کے دوران انسداد تجارتی پردہ پوشی قانون کی خلاف ورزی کرنے والے  اپنے کاروبار کو قانون کے دائرے میں لاکر مہلت سے فائدہ اٹھاسکتے ہیں‘۔

وزیر تجارت ڈاکٹر ماجد القصبی جو انسداد پردہ پوشی کے لیے قائم ادارے کی نگران کمیٹی کے سربراہ بھی ہیں نے  کہا کہ ’متعدد بڑے اور درمیانے درجے کے اداروں نے انسداد تجارتی پردہ پوشی قانون کی خلاف ورزی کرنے والوں کو دی گئی مہلت سے فائدہ اٹھایا ہے۔ یہ ایسے ادارے ہیں جن کی سالانہ آمدنی دس ارب ریال سے زیادہ تھی‘۔ 

یاد رہے کہ سعودی حکومت نے اصلاح کے لیے انسداد تجارتی پردہ پوشی قانون کی خلاف ورزی کرنے والوں کو دو  آپشن دیے تھے۔ ایک یہ تھا کہ غیر قانونی تجارتی ادارے کو سعودی اور غیرملکی کے مشترکہ کاروبار کی شکل دی جائے۔ دوسرا آپشن یہ تھاکہ سعودی کے نام سے کاروبار کرنے والا غیرملکی متعلقہ ادارے کا اندراج اپنے نام سے کرائے۔ 

وزیر تجارت نے کہا کہ ’ آئندہ چھ ماہ کے دوران وزارت تجارت انسداد تجارتی پردہ پوشی قانون کی خلاف ورزی کرنے والوں کی  تمام درخواستوں کو اعلانیہ پالیسی کے تحت نمٹا تی رہے گی‘۔

وزارت تجارت کے ماتحت اصلاح حال ادارے کے مطابق ’سعودیوں کے نام سے غیرملکیوں کے کاروبار کو قانون کے دائرے میں لانے کے لیے مختلف اقتصادی سرگرمیاں ریکارڈ پر آئی ہیں، اصلاح حال کی درخواست دینے والوں میں تھوک، ریٹیل، ٹھیکے داری، قیام و طعام، امدادی صنعتوں، ٹرانسپورٹ، سامان ذخیرہ کرنے اور دیگر اقتصادی سرگرمیوں سے منسلک افراد کا تعلق ہے‘۔

 ادارے کا کہنا ہے کہ’ اصلاح حال کے لیے چھ طریقے بیان کیے  تھے- آئندہ بھی یہ آپشن غیرملکیوں کے لیے کھلے رہیں گے۔ان  آپشنز میں سعودی اور غیرملکی مشترکہ ادارہ قائم کرلیں۔ غیرملکی اپنے نام سے کاروبار کا اندراج کرالیں۔سعودی اقتصادی سرگرمی جاری رکھتے ہوئے کسی اور کو اپنا شریک کاروبار کرلیں۔ سعودی ادارے کا تصفیہ کرے۔غیرملکی منفرد اقامہ حاصل کرکے کاروبار کرے یا غیرملکی سعودی عرب سے رخصت ہوجائے۔

سعودی وزارت تجارت نے تنبیہ کی کہ سعودیوں کے نام سے غیرملکیوں کے کاروبار کو قانون کے دائرے میں لانے کی آخری تاریخ 16 فروری 2022 ہے، اس کے بعد جو لوگ کاروبار کو قانون کے دائرے میں لے آئیں گے انہیں سزاؤں سے استثنی ملے گا اور  ان سے ماضی کا انکم ٹیکس  بھی  نہیں لیا جائے گا۔  اصلاح حال کے حوالے سےمزید  تفصیلات mc.gov.sa سے حاصل کی جاسکتی ہیں۔

مزید :

عرب دنیا -