خبر پر موقف کیلئے رابطہ کرنے پر ایف آئی اے سب انسپکٹر کا صحافی پر مقدمہ 

خبر پر موقف کیلئے رابطہ کرنے پر ایف آئی اے سب انسپکٹر کا صحافی پر مقدمہ 

  

کراچی،اسلام آباد(آن لائن)وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) کے کرپشن پر دو بار معطل ہونیوالے سب انسپکٹر احمد خان میرانی (جسے مبینہ طور پر اپنے ڈائریکٹر ایف آئی اے سندھ زون عامر فاروقی کی مکمل آشیر باد حاصل ہے)نے 31 تاجروں اور ممتاز صنعتکاروں کو ایف آئی آر نمبر 09/21کے تحت نوٹسز جاری کئے اور الزام عائد کیا کہ وہ منی لانڈرنگ میں ملوث ہیں۔جب یہ صنعتکار اور تاجر کال اپ نوٹس کے تحت پیش ہوئے تو مبینہ طور پر ان سے پانچ کروڑ روپے رشوت لی گئی،ایسی شکایات جب میڈیا تک پہنچیں تو روزنامہ جناح اور آن لائن نیوز نیٹ ورک کے ایڈیٹر انچیف محسن جمیل بیگ نے ان کا موقف جاننے کیلئے رابطہ کیا تو نہ صرف سب انسپکٹر احمد خان میرانی نے ہتک آمیز رویہ اختیار کیا بلکہ ان سے نمٹ لینے کی دھمکیاں بھی دیں اور حیرت انگیز طور پر بعد میں اسی ایف آئی آر میں محسن جمیل بیگ کو بھی پیر کو ایف آئی اے سٹیٹ بینک سرکل کراچی طلب کرلیاگیا پنجاب،سندھ اور بلوچستان کی بزنس کمیونٹی نے الزام عائدکرتے ہوئے کہاہے کہ مذکورہ سب انسپکٹراحمد خان میرانی کے پشت پناہی کرنیوالے ڈائریکٹر عامر فاروقی کو ماضی میں مختلف الزامات پر سندھ بدر کیا گیا تھا تاہم وہ اپنا اثرورسوخ استعمال کرکے واپس آگئے۔ واضح رہے کہ احمد خان میرانی کرپشن کیسز میں 2 بار معطل رہ چکا ہے اور اس کا نام ان ایف آئی اے کے اہلکاروں میں شامل ہے جو کہ پیپلز پارٹی دور میں بحال کر دیئے گئے تھے مگر اب سپریم کورٹ نے ان کو نکالنے کے احکامات جاری کئے ہیں۔ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ مذکورہ اہلکاروں کے خلاف مختلف شکایات پر نیب بھی تحقیقات کررہاہے۔

صحافی پر مقدمہ 

مزید :

علاقائی -