سانحہ  مینار پاکستان…… شرمناک!

سانحہ  مینار پاکستان…… شرمناک!

  

ذمہ داروں کو سخت ترین سزا دی جائے، معروف فنکاروں کا مطالبہ

سوشل میڈیا پر گزشتہ ہفتے ٹک ٹاکر عائشہ اکرم کے ساتھ مینار پاکستان پر14اگست کو ہونے والا واقعہ ٹاپ ٹرینڈ رہا۔ شوبزسے وابستہ شخصیات نے لاہور کے مینارِ پاکستان پر ٹک ٹاکر خاتون عائشہ اکرم کو ہراساں کرنے کے واقعے پر اپنے ردعمل میں انتہائی غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے ذمے داران کو عبرتناک سزا دینے کا مطالبہ کیا ہے۔پروڈیوسر و اداکار اسلم حسن کا کہنا ہے کہ شرم آ رہی ہے کہ میں اس معاشرے کا حصہ ہوں، یہ قابلِ شرم ہے۔سینئر اداکاراچھی خان نے کہا ہے کہ جب سے اس واقعے کے بارے میں سنا ہے شرمندگی ہو رہی ہے، کیا ایسے ہوتے ہیں پاکستانی؟اداکار کا یہ بھی کہنا ہے کہ یہ 400 کا لشکر تھا، ان کو عبرت ناک سزا دینی چاہیئے، ڈوب کر مر جائیں جنہوں نے ایسا کیا، شرم آنی چاہیے۔ اداکارہ سانولی شاہ نے مینارِ پاکستان واقعہ پر اپنا ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ ہم خواتین نہ محفوظ ہیں اور نہ ہی ہم آزاد ہیں۔اداکارہ غنا علی نے مینار پاکستان واقعے کا نوٹس لیے جانے کے بعد وزیر اعظم سے سخت اقدامات کا مطالبہ کردیا اور ساتھ ہی انہیں مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ انہوں نے پہلے بھی نوٹس لیے ہیں۔اداکارہ نے طنزیہ انداز میں لکھا کہ نور بھی نوٹس ہو رہی ہیں اور اب لاہور میں مینار پاکستان کے قریب نشانہ بننے والی خاتون بھی نوٹس ہو رہی ہیں۔ ہانیہ عامر نے بھی وزیر اعظم سے سخت اقدامات کا مطالبہ کرتے ہوئے کرفیو نافذ کرنے کا مشورہ دے ڈالا۔سینئر اداکار اور ڈائریکٹر سہراب افگن نے لاہور واقعے پر کمنٹس کرتے ہوئے کہا کہ خاتون پر حملہ کرنے والے  حضرات سے روبوٹ بھی اچھے ہیں، عورت کو نشانہ بنانے والے 400 افراد جہنم کے حقدار ہیں۔ مہوش حیات نے   ٹوئٹر پر جاری کئے گئے پیغام میں کہا کہ ایک بار پھر سے، میں حیران اور بے آواز ہوکر رہ گئی ہوں۔مہوش حیات نے کہا کہ کسی بھی مہذب معاشرے میں خواتین کا وقار، تحفظ اور احترام ہونا چاہیے لیکن لگتا ہے کہ یہ ہم پر لاگو نہیں ہوتا۔اداکارہ عائزہ خان کا کہنا ہے کہ اب تک کورونا وائرس کی وجہ سے کہتے ہیں کہ گھرمیں محفوظ رہیں، مگر شرم آتی ہے یہ کہتے ہوئے کہ گھر میں رہیں۔اداکارہ انوشے نے واقعے پر اپنے ردِ عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ دیکھ کر افسوس ہوتا ہے کہ لڑکی کو ہراساں کیا گیا۔اداکارہ مریم نفیس نے کہا ہے کہ عائشہ اکرم اکیلی نہیں تھی، دن کا وقت تھا اور وہ پورے لباس میں تھی۔

مزید :

ایڈیشن 1 -