پنجاب حکومت کا بڑے پارکوں میں نجی سکیورٹی کمپنیوں کی خدمات لینے کافیصہ ویڈیو بنا نے پر پابندی کی تجویز

پنجاب حکومت کا بڑے پارکوں میں نجی سکیورٹی کمپنیوں کی خدمات لینے کافیصہ ...

  

 لاہور(آئی این پی)گریٹر اقبال پارک میں خاتون سے بدسلوکی کے افسوسناک واقعہ کے پنجاب حکومت نے بڑے پارکوں میں نجی سیکیورٹی کمپنیوں کی خدمات حاصل کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ذرائع کے مطابق مسلح پرائیوٹ گارڈز موٹرسائیکلوں پر پارکوں میں گشت کریں گے، اس کے ساتھ ہی پنجاب حکومت نے پی ایچ اے کو پنجاب کے تمام پارکوں میں کیمرے لگانے کی ہدایت بھی کی ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ پنجاب حکومت نے پرانے کیمرے ایک ہفتہ میں ٹھیک کروانے کا فیصلہ کیا ہے۔دوسری جانب پی ایچ اے نے اپنے سیکیورٹی گارڈز کو ڈنڈا بردار فورس میں بدلنے کا فیصلہ کیا جس کے لیے پی ایچ اے فورس کی خصوصی تربیت کروائی جائے گی۔اس حوالے سے مشیر وزیراعلی آصف محمود نے کہا ہے کہ پارکوں میں لائٹس کا انتظام کرنے کے احکامات جاری کیے ہیں۔مشیر وزیراعلی آصف محمود نے کہا کہ پارکوں میں خواتین کی حفاظت پی ایچ اے کا فرض ہے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ پارکوں میں خواتین اور فیملیز کے لیے ہفتہ میں ایک دن مقرر کرنے کی تجویز ہے۔پارکس اینڈ ہارٹی کلچر اتھارٹی (پی ایچ اے)نے لاہور کے پانچ بڑے پارکوں میں ویڈیو بنانے پر پابندی کی تجویز دے دی۔ پی ایچ اے کے وائس چیئرمین حافظ ذیشان نے کہا ہے کہ پارکس میں ٹک ٹاکرز اور سوشل میڈیا چینلز پر کام کرنے والوں کو ویڈیو بنانے نہیں دی جائے گی۔انہوں نے بتایا کہ پبلک پارک میں ویڈیو بنانے والوں سے پیسے لیے جانے کی تجویز بھی زیر غور ہے۔ پیسے وصول کرنے کے بعد پی ائچ اے مطلوبہ وقت کیلئے سکیورٹی بھی فراہم کرے گا۔ان کا کہنا تھا کہ پی ائچ اے کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کی میٹنگ میں فیصلے کیے جائیں گے۔

نجی سیکیورٹی

مزید :

صفحہ اول -