امریکی انتظامیہ نے کابل سے شہریوں کے انخلاء کیلئے تین کمرشل ایئر لائنز بک کر لیں 

  امریکی انتظامیہ نے کابل سے شہریوں کے انخلاء کیلئے تین کمرشل ایئر لائنز بک ...

  

 واشنگٹن (اظہر زمان، بیورو چیف) بائیڈن انتظامیہ نے بتایا ہے کہ افغانستان میں موجود امریکی شہریوں کو واپس لانے کیلئے تین کمرشل ایئر لائنز بک کرلی گئی ہیں۔ پینٹاگون کے ایک ترجمان نے اتوار کے روز ایک بیان جاری کیا ہے جس کے مطابق یونائیٹڈ ائرلائنز، امریکن ائرلائنز اور ڈیلٹا ائرلائنز کے اٹھارہ طیارے انخلاء مکمل ہونے کیلئلے صرف اس کام کیلئے مخصوص رہیں گے اور اس دوون واشنگٹن اور کابل کے درمیان معمول کی کمرشل پروازوں کو منسوخ کریں گے۔ امریکی حکومت کیلئے کام کرنے والے افراد سمیت افغانستان میں موجود تمام امریکی شہریوں کے علاوہ امریکہ کے سرکاری کاموں میں مدد فراہم کرنے والے افغان باشندے جن کو وہاں خطرہ درپیش ہوسکتا ہے انخلاء کی فہرست میں شامل ہیں۔ ایسے افراد جو افغانستان سے نکل کر قریبی ممالک میں پناہ لئے ہوئے ہیں ان کو بھی ان پروازوں کے ذریعے امریکہ واپس لایا جائے گا۔ پینٹاگون کے ترجمان جان کربی نے مزید بتایا کہ سول طیاروں کو سرکاری کام کیلئے استعمال کرنے کا یہ تیسرا موقع ہے پہلی مرتبہ 1990ء میں خلیج کی جنگ اور پھر 2002ء میں عراق پر حملے کے وقت بھی ایسا کیا گیا تھا۔ اب امریکہ نے برطانیہ سمیت دیگر غیر ممالک کے ساتھ مل کر ہزاروں فوجی انخلاء کے کام میں مدد کیلئے خطے میں بھیج رکھے ہیں جو اپنے آپ کو ہوائی اڈوں کی حدود سے باہر رکھتے ہیں۔ سرکاری اطلاعات کے مطابق گزشتہ اتوار طالبان کے کابل کا کنٹرول سنبھالنے سے لے کر اس اتوار تک پچیس ہزار امریکی باشندوں کو واپس امریکہ لے جایا جا چکا ہے۔ اب بھی مزید ہزاروں باشندے وہاں سے انخلاء کے منتظر ہیں۔

کمرشل پروازیں 

مزید :

صفحہ اول -