ختم نبوت ؐ قوانین میں ترمیم کرنے کی کسی کو اجازت نہیں دینگے: اکرم خان درانی 

ختم نبوت ؐ قوانین میں ترمیم کرنے کی کسی کو اجازت نہیں دینگے: اکرم خان درانی 

  

 بنوں (نمائندہ پاکستان)بنوں سابق وزیر اعلیٰ واپوزیشن لیڈر اکرم خان درانی اور قومی اسمبلی میں جے یو آئی کے پارلیمانی لیڈر مولانا اسد محمود نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت کے ختم نبوت قوانین میں ترمیم کرنے کی ناپاک عزائم خاک میں ملا دینگے ختم نبوت شق میں تبدیلی کی کوشش کی گئی تومولانا فضل الرحمن کی قیادت میں میدان میں شانہ بشانہ ہونگے موجودہ حکومت مغربی قوتوں کی ایماء پر ملک میں قادیانیوں کو چھپکے سے لانے اور اہم عہدوں پر براجمان کرنے کیلئے سازش کررہی ہے لیکن حکومت کی یہ سازش کسی بھی صورت کامیاب نہیں ہونگے اور پارلیمنٹ کے اندر اور باہر سیسہ پلائی دیوار بن کر کھڑے ہونگے تبدیلی کے نام نہاد دعویداروں نے ملک میں بے حیائی کو فروغ دیکر عالمی سطح پر مغربی ایجنڈے کی تکمیل میں مصروف ہے روزانہ ایک نہ ایک ایسا واقعہ ضرور ہوتا ہے جس سے ملک کی بدنامی ہوتی ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے بنوں کے علاقہ داؤد شاہ میں ختم نبوت کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر ممبر قومی اسمبلی زاہد اکرم خان درانی، مفتی فضل غفور خان، سابق تحصیل ناظم انجینئر ملک احسان خان،صوبائی رہنما ملک اکرام اللہ خان بھرت،سینان درانی ایڈوکیٹ سمیت دیگر قائدین نے بھی خطاب کیا مقررین نے کہا کہ نام نہاد نالائق جعلی حکومت کے تین سالہ دور تباہی بربادی اور بے حیائی پر مبنی سیاہ ترین دور رہا جس سے سلیکٹڈ اور سلیکٹر دونوں کے کار نامے شامل ہے حکومت عالمی سطح پر آج ناکام خارجہ پالیسی کی وجہ سے تنہائی کا شکار ہوا ہے مہنگائی بے روزگاری عروج پر پہنچ چکی ہے عوام دو وقت کی روٹی کیلئے ترس رہی ہے اشیاء خورونوش کی قیمتیں آسمان کو چھو رہی ہے جس سے عوام پریشانی میں مبتلا ہوگئے ہیں انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی حکومت کا ایجنڈہ یہی ہے کہ ختم نبوت قوانین میں ترمیم کریں او ر اس کیلئے انہوں نے قادیانیوں کو اقتصادی کونسل میں شامل کرنے کی کوشش کی لیکن جمعیت علماء اسلام کے مضبوط موقف کی وجہ سے یہ سازش کامیاب نہ ہوسکی لیکن حکومت اب بھی سازشوں کی جال پھیلایا ہوا ہے انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی نااہل اور سیاہ دور ملکی سیاسی ومذہبی تاریخ میں ضرور لکھا جائیگا تاکہ آنے والے نسلوں کو پتہ تو چلے کہ مغرب کے ایجنڈوں پر مشتمل ایک ایسی سلیکٹڈ حکومت بھی تھی جنہوں نے اپنے قائد کے ایجنڈے کیلئے پارلیمنٹ کے اندر اور باہر کوشش کی مگر مولانا کے سپاہیوں کی بدولت کامیابی نصیب نہیں ہوئی آج ہم یہ عہد کرتے ہیں ختم نبوت قوانین میں تبدیلی کوشش کی گئی تو موجودہ حکومت کے خلاف ہر محاذ پر ڈٹ کر مقابلہ کرینگے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -