حریت رہنماﺅں کاگمنا م اجتماعی قبروںکی عالمی تحقیقات کا مطالبہ

حریت رہنماﺅں کاگمنا م اجتماعی قبروںکی عالمی تحقیقات کا مطالبہ

  

سرینگر(اے پی پی) مقبوضہ کشمیرمیںکل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق، بزرگ حریت رہنما سید علی گیلانی اور جموں و کشمیر لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمدیاسین ملک نے مقبوضہ علاقے میں دریافت ہونے والی گمنا م اجتماعی قبروںکی بین لاقوامی سطح پر آزادانہ تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے ۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق ان رہنماﺅںنے پولیس کے ڈائریکٹر جنرل اشوک پرساد کے حالیہ بیان کی شدید مذمت کی جس میں انہوں نے مقبوضہ علاقے میں گمنام قبروںکی موجودگی سے انکار کیا تھا۔ انہوںنے کہاکہ زمینی حقائق سے انکار قابض انتظامیہ کی پہچان بن چکی ہے۔ میر واعظ عمر فاروق نے ایک انٹرویو میں کہا کہ اجتماعی قبروں کی فوری طور پر آزادانہ تحقیقات ہونی چاہئیں تاکہ حقیقت واضح ہو اور عالمی برادری مقبوضہ علاقے کی زمینی صورت حال جان سکے۔ انہوں نے کہ انسانی حقوق کی کئی تنظیمیں پہلے ہی اجتماعی قبروں کی شناخت کر چکی ہیں لہذا حقائق سے انکار کو کسی بھی سطح پر درست قرار نہیں دیا جاسکتا۔میر واعظ نے کہا کہ پولیس چیف کا بیان سراسر غیر منطقی ہے کیونکہ گمنام اجتماعی قبروں کا معاملہ پہلے ہی ہائی کورٹ میں ہے۔ سید علی گیلانی نے ایک بیان میں کہا کہ اجتماعی قبروں کے معاملے کی عالمی سطح پرتحقیقات ہونی چاہئیںاور دنیا بھر سے ایک آزادانہ تحقیقاتی ٹیم اس معاملے کی تحقیقات کرے۔ انہوں نے کہا کہ پولیس چیف سے یہ پوچھا جانا چاہیے اگر انہیں یقین ہے کہ کشمیرمیں اجتماعی قبریں موجود نہیںتو پھر بھارتی حکومت انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں سے معاملے کی تحقیقات کرانے میں کیوں ہچکچا رہی ہے۔

بزرگ رہنما نے کہاکہ اجتماعی قبروںکے مسئلے کو ایک منصوبہ بند سازش کے تحت ہر سطح پر نظر انداز کیا جا رہا ہے۔ محمد یاسین ملک نے ایک انٹرویو میں کہا کہ اگر مقبوضہ علاقے میں اجتماعی قبریں موجود نہیں تو پھر قابض انتظامیہ کو ان دس ہزار سے زائد افراد کے بارے میں معلومات فراہم کرنی چاہئیں جنہیں دوران حراست لاپتہ کیاگیا ۔ انہوں نے کہا کہ کشمیری جاننا چاہیے ہیں کہ وہ دس ہزار افراد کہاں ہیں جنہیں ان کے اہلخانہ کے سامنے گرفتار کیا گیا اور وہ اب تک اپنے گھروںکو واپس نہیں لوٹے۔ دختران ملت کی چیئرپرسن آسیہ اندرابی نے ایک بیان میں کہا کہ پولیس کے سربراہ کابیان زمینی حقائق کے خلاف ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کشمیریوں کو اصل صورت حال کا بخوبی ادراک ہے اور پولیس افسروں کے اس طرح کے بیانات کی کوئی ساکھ نہیں۔

مزید :

عالمی منظر -