امریکہ کے ساتھ مہذب رشتے قائم ہوسکتے ہیں: راو¿ل کاسترو

امریکہ کے ساتھ مہذب رشتے قائم ہوسکتے ہیں: راو¿ل کاسترو

ہوانا(اے پی پی) کیوبا کے صدر راو¿ل کاسترو نے امریکہ کے ساتھ مہذب رشتے قائم کرنے کی بات کہی ہے تاہم انھوں نے یہ بھی کہا ہے کہ دونوں ممالک کو ایک دوسرے کے اختلافات کا احترام کرنا چاہیے۔برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق راو¿ل کاسترو کا یہ بیان جنوبی افریقی رہنما نیلسن منڈیلا کی یاد میں دعائیہ تقریب میں امریکی صدر براک اوباما سے مصافحے کے بعدآیا ہے۔ کیوبن عوام سے خطاب کے دوران صدر کاسترو نے کہا کہ کیوبا اور امریکہ کے حکام کے درمیان گذشتہ سال عملی معاملات مثلا امیگریشن اور ڈاک کے نظام کی بحالی پر کئی بار ملاقاتیں ہوئی ہیں۔ صدر کاسترو نے کہا کہ امریکہ کو چاہیے کہ کیوبا میں کمیونسٹ نظریہ کی حامل حکومت میں تبدیلی کا مطالبہ چھوڑ دے اس سے دونوں ممالک کے رشتے میں بہتری لانے میں مدد ملے گی، اس سے پتہ چلتا ہے کہ امریکہ کے ساتھ مہذب رشتے قائم کیے جا سکتے ہیں۔گذشتہ 55 سال کی طرح مزید 55 سال رہ سکتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ اگر ہم واقعی دو طرفہ تعلقات میں بہتری چاہتے ہیں تو ہمیں ایک دوسرے کے اختلافات کا احترام کرنا سیکھنا ہوگا اور اس کے ساتھ ہی خود کو پرامن ڈھنگ سے رہنے کا عادی بنانا ہوگا۔ اگر ایسا نہیں تو پھر رشتہ نہیں۔ ہم گذشتہ 55 سال کی طرح مزید 55 سال رہ سکتے ہیں لیکن اس کے ساتھ ہی انھوں نے خبردار کیا کہ اگر ہم واقعی دو طرفہ تعلقات میں بہتری چاہتے ہیں تو ہمیں ایک دوسرے کے اختلافات کا احترام کرنا سیکھنا ہوگا اور اس کے ساتھ ہی خود کو پرامن ڈھنگ سے رہنے کا عادی بنانا ہوگا۔ اگر ایسا نہیں تو پھر رشتہ نہیں۔ ہم گذشتہ 55 سال کی طرح مزید 55 سال رہ سکتے ہیں۔

مزید : عالمی منظر