دنیا کے سب سے بڑے صحراسہارا کے گرد ہزاروں کلومیٹر پر درخت کیوں لگائے جارہے ہیں؟ جواب جان کر آپ بھی قدرت پر دنگ رہ جائیں گے

دنیا کے سب سے بڑے صحراسہارا کے گرد ہزاروں کلومیٹر پر درخت کیوں لگائے جارہے ...
دنیا کے سب سے بڑے صحراسہارا کے گرد ہزاروں کلومیٹر پر درخت کیوں لگائے جارہے ہیں؟ جواب جان کر آپ بھی قدرت پر دنگ رہ جائیں گے

  

جبوتی (نیوز ڈیسک)سینکڑوں سال قبل چین کو بیرونی حملہ آوروں سے بچانے کے لئے عظیم دیوار چین تعمیر کی گئی جو اب ایک تاریخی عجوبے کی حیثیت رکھتی ہے۔ افریقہ میں اب اس سے بھی بڑے عجوبے کی تعمیر جاری ہے جس کا مقصد افریقہ کو ایک خطرناک دشمن سے بچانا ہے، جس کا مقابلہ نہ کیا گیا تو خدشہ ہے کہ یہ پور ے براعظم کو ہی نکل جائے گا۔ یہ خطرہ کوئی دشمن ملک نہیں بلکہ عظیم صحرائے صحارا ہے جو کہ دنیا کا سب سے بڑا صحرا ہے اور آہستہ آہستہ جنوبی افریقہ کے درجنوں ممالک کی طرف بڑھ رہا ہے۔ یہ ممالک کئی سال سے اپنی زرخیز زمینوں کو ریتلے میدانوں میں تبدیل ہوتا دیکھ رہے ہیں اور سارا براعظم صحرا میں بدلنے کے خدشے کے پیش نظر بڑھتے ہوئے صحرا کے سامنے بندھ باندھنے کا فیصلہ کیا گیا۔

مزید جانئے: دنیا کا واحد ایئرپورٹ جو بیک وقت 3 ممالک میں واقع ہے ، کیا آپ کو اس کے بارے میں معلوم ہے؟

صحرائے صحاراکی پیشقدمی روکنے کے لئے افریقہ کے درجنوں ممالک نے مل کر فیصلہ کیا کہ اس کے سامنے درختوں کی ایک عظیم دیوار تعمیر کی جائے گی کیونکہ اسے روکنے کا کوئی اور ذریعہ نہیں۔ اس فیصلے کے بعد ”عظیم سبز دیوار“ کی تعمیر کا منصوبہ 2007ءمیں شروع ہوا جس کے تحت بحرہ اوقیانوس کے کنارے واقعہ سینیگال سے لے کر خلیج عدن پر واقع جبوتی تک 7ہزار کلومیٹر لمبی درختوں کی دیوار تعمیر کی جائے گی۔ افریقہ کو صحرائے صحارا سے بچانے کے لئے اس منصوبے کے تحت کروڑوں درخت بونے کا سلسلہ جاری ہے۔ یہ درخت 15کلومیٹر چوڑی اور 7ہزار کلومیٹر لمبی ایک قوس کی شکل میں لگائے جارہے ہیں۔ افریقی رہنماﺅں کا کہنا ہے کہ ”عظیم سبز دیوار“ ناصرف صحرا کا راستہ روکے گی بلکہ یہ براعظم افریقہ کے باسیوں کو ریت کے طوفانوں سے بھی بچائے گی، ماحول سے آلودگی کو ختم کرے گی اور بے پناہ مالی اور معاشی فوائد کی حامل ہوگی۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -