گللگت بلتستان کو سو فیصد امن والا علاقہ بنا دیا،1500پولیس اہلکار بھرتی کرینگے،منظوری مل گئی : وزیر اعلیٰ

گللگت بلتستان کو سو فیصد امن والا علاقہ بنا دیا،1500پولیس اہلکار بھرتی ...
گللگت بلتستان کو سو فیصد امن والا علاقہ بنا دیا،1500پولیس اہلکار بھرتی کرینگے،منظوری مل گئی : وزیر اعلیٰ

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک )گلگت بلتستان کے وزیر اعلیٰ نے   کہا ہے کہ صوبےکو سوفیصد امن والا علاقہ قرار دے دیا گیا ہے،دل کا ہسپتال بنارہے ہیں۔حکومت اگر صیح کام کرے تو مسائل پیدا نہیں ہوتے۔حافظ حفیظ الرحمن نے ان خیالات کا اظہار کیپیٹل ٹی وی کے پروگرام’’ سیدھی بات ‘‘ میں انٹرویو دیتے ہوئے کیا۔ان کا کہنا تھا گلگت سکردو روڑ پر چالیس ارب لاگت آئی ہے اپنے دور میں صوبے میں سڑکوں کا جال بچھا دینگے۔پہلی بار گلگلت بلتستان کی طرف توجہ دی گئی ہے اور وزیر اعظم نواز شریف نے صوبے کیلئے بے مثال اقدامات کئے ہیں۔میزبان سینئر تجزیہ نگار محمد نوشاد علی کے سکیورٹی کے حوالے سے ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے وزیر اعلیٰ نے بتایا کہ پچھلے دور میں روز دس،دس لاشیں گرتی تھیں لیکن اب ہم نے دہشت گردی پر کنٹرول کرلیا ہے صرف ایک نانگا پربت والا واقعہ ہوا ہے۔اگر وفاقی حکومت کام کرے تو سیکورٹی بہتر ہوسکتی ہے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ صوبے میں فرقہ واریت پر بہت دہشت گردی ہوتی تھی۔مٓذہبی رہنما کی ایک تقریر پر آگ لگ جاتی تھی لیکن ہم ایسا نہیں ہونے دے رہے۔ہر مسجد میں امام کی تقریر کی ویڈیو تیارکی جاتی ہے اگر اس نے کوئی خون خرابے والی بات کی ہو تو اسے ویڈیو کو عدالت پیش کرکے سزا دلوائی جاتی ہے۔اب صوبے کو سوفیصد امن والا علاقہ قرار دیدیا گیا ہے۔مختلف سوالوں کا جواب دیتے ئے وزیر اعلیٰ کا کہنا تھا کہہ ہسپتالوں کی ایمر جنسی میں ادویات فری کردی ہیں۔28کروڑ کی ایم آر مشین بھی فراہم کی گئی ہے۔اڑھائی ارب سے دل کا ہسپتال بن رہا ہے۔پہلے چھ،چھ ماہ اب ڈومیسائل ایک ہفتے میں ملتا ہے۔تمام محکموں میں ملازمین کی حاضری یقینی بنانے کیلئے  بائیو میٹرک سسٹم لگا دیا ہے۔1500پولیس اہلکار بھرتی کررہے ہیں ،وزیر اعظم نے منظوری دیدی ۔ہم شہباز شریف سے سےسیکھتے ہیں۔آخر میں وزیر اعلیٰ کا کہنا تھا کہ ن  لیگ نے لاہور تو بنالیالیکن  پیپلز پارٹی نے لاڑکانہ نہیں بنایا۔

مزید :

اسلام آباد -