سیفٹی ایکٹ لگا دیا گیا انہیں مٹن دیا گیا

سیفٹی ایکٹ لگا دیا گیا انہیں مٹن دیا گیا

  

سری نگر(کے پی آئی) کل جماعتی حریت کانفرنس گ کے چیئرمین سید علی گیلانی نے نائد کھائے حاجن میں پولیس کی طرف سے سیرت کانفرنس پر پابندی لگانے، اسلام آباد میں تحریک حریت کے ایک ہمدردعرفان احمد خان پر پبلک سیفٹی ایکٹ لگانے اور انہیں مٹن جیل بھیج دینے اور بجبہاڑہ میں درجنوں جوانوں کو گرفتار کرنے کی کارروائیوں کی شدید الفاظ میں مذمت کی۔ انہوں نے کہاکہ مفتی حکومت نے پوری ریاست کو عملا ایک جیل خانے میں تبدیل کردیا ہے اور لوگوں کی پرامن آواز کو دبانے کے لیے پولیس کو کھلی چھوٹ دی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پی ڈی پی اقتدار کی خاطر آر ایس ایس کے ایجنڈے کو آگے بڑھا رہی ہے اور اس صورتحال نے ریاست کے مسلمانوں کی شناخت کو زبردست خطرے میں ڈالا ہوا ہے۔ گیلانی نے کہا کہ ربیع الاول کے مہینے میں ساری دنیا کے ساتھ ساتھ جموں کشمیر میں بھی ہر جگہ سیرتی جلسے اور اجتماعات منعقد ہورہے ہیں اور ان پر پابندی لگانے کی بظاہر کوئی وجہ اور کوئی جواز نہیں ہے، البتہ سوناواری پولیس نے اتوارکونائد کھائے حاجن میں منعقد ہورہی ایک سیرت کانفرنس پر پابندی لگادی اور شرکاجو اجتماع گاہ کی طرف آرہے تھے، انہیں راستے میں روکا گیا اور واپس جانے پر مجبور کردیا گیا۔ گیلانی نے کہا کہ یہ ریاستی دہشت گردی کے ساتھ ساتھ مداخلت فی الدین کی بھی کارروائی ہے اور اس کو کسی بھی صورت میں برداشت نہیں کیا جاسکتا ہے۔

انہوں نے کہاکہ تحریک حریت کو کسی قسم کی سیاسی مکانیت (Political Space)نہیں دی جارہی ہے اور اس کے ساتھ ہر سطح پر سوتیلا سلوک روا رکھا جارہا ہے۔ گیلانی نے کہا کہ اس طرح کی حکومتی پالیسی سے ریاست کی سیاسی غیریقینیت اور عدمِ استحکام کی صورتحال میں دن بہ دن اضافہ ہورہا ہے اور لوگ گٹھن اور حبس کے ماحول میں جینے پر مجبور ہیں۔ انہوں نے خبردار کیا کہ اس پالیسی کے سنگین نتائج برآمد ہوں گے اور ان کی تمام تر ذمہ داری حکومتِ وقت پر عائد ہوگی۔

مزید :

عالمی منظر -