اربوں کا فنڈ ملنے کے باوجود صوبائی دارالحکومت کے متعدد تھانوں کی عمارتیں خستہ حال

اربوں کا فنڈ ملنے کے باوجود صوبائی دارالحکومت کے متعدد تھانوں کی عمارتیں ...

  

لا ہور (خبر نگا ر ) 86ارب رو پے کا فنڈ حا صل کر نے والی پنجا ب پو لیس صو با ئی دا رالحکومت میں واقع متعد د مخدو ش تھانو ں کی عما رتو ں کو ٹھیک نہ کرو اسکی جبکہ 14تھانے کرا یہ کی بلڈ نگ میں بنے ہیں 16 تھا نے ایسے ہیں جو یو نین کو نسل سمیت د یگر محکموں کی بلڈ نگ میں قائم ہیں ۔صر ف 37 تھانوں کی عما رتیں نئی ہیں جن میں ما ڈ ل پو لیس اسٹیشن بھی شامل ہیں ۔ تفصیلات کے مطابق پنجاب حکومت، "تھانہ کلچر" کو تبدیل قانون اور انصاف کی حکمرانی کے اصولوں کی بالادستی، عوام اور پولیس کے درمیان باہمی اعتماد کی ترقی کے لئے کمیونٹی پولیس کے تصور کو فروغ دینے کی طرف سے ایک جرائم سے پاک معاشرہ قائم کرنے کے لئے "تھانہ کلچر" کی تبدیلی کی کوشش کررہی ہے جبکہ 10کے قر یب ماڈل پولیس اسٹیشن بھی موجود ہیں جن میں جد ید ٹیکنا لو جی موجود ہے جن میں گرین ٹاؤن،مسلم ٹاؤن،رائیونڈ سٹی،شاہدرہ، ڈ یفنس ۔A،نیو انارکلی ماڈل ٹاؤن، شما لی چھاؤ نی ، غا لب ما ر کیٹ وغیر ہ تھا نے شامل ہیں ۔جبکہ 6تھانوں کو مخدو ش قرا ر دے د یا گیا ہے۔تھانہ مصری شاہ 1980 میں تعمیر کیا گیا اس کا رقبہ 3کنال18مرلہ،تھانہ لوئرمال 1984میں تعمیر ہوا رقبہ 8کنال ، تھانہ اچھرہ 1984میں تعمیر ہوا رقبہ 4کنال ،تھانہ مزنگ 1980میں تعمیر ہوا رقبہ 4کنال ، تھانہ قلعہ گوجر سنگھ 1984میں تعمیر ہوا رقبہ 22کنال 17مرلے ، جبکہ5 تھانے پرانی عمارتوں میں ہیں جن میں تھا نہ پرانی انارکلی رقبہ 8کنال 15مرلے ، تھانہ نولکھا رقبہ 12کنال 7مرلے، تھانہ اکبری گیٹ رقبہ 8کنال 3مرلے ، تھانہ لوہاری گیٹ رقبہ 2کنال 17مرلے اور تھانہ چوہنگ ( رقبہ 46کنال 6مرلے) شامل ہیں۔جبکہ متعد د تھا نو ں کی بلڈ نگ کی تفصیل کچھ ایسے ہے تھانہ بادامی باغ ( رقبہ 9کنال) ، تھانہ گوالمنڈی ( رقبہ 2کنال )،تھانہ یکی گیٹ ( رقبہ 12مرلے) ، تھانہ مغلپورہ( رقبہ 53کنال 13مرلے )،تھانہ مزنگ( رقبہ 3کنال 14مرلے )، تھانہ مستی گیٹ( رقبہ 2کنال 15مرلے) شامل ہیں۔ان تھانوں کی عمارتوں کی خستہ حالی کہ وجہ سے پولیس اہلکار اور سائلین تھانہ میں داخل ہونے سے ڈرنے لگے ہیں جبکہ ان میں سے کئی تھانوں کی چھتیں بارشوں کے دوران ٹپکتی ہیں جس کی وجہ سے عمارتوں میں کام کرنا بھی دشوار ہو گیا ہے۔نئی عمارتوں میں قائم تھانوں میں 2010 کے بعد بنائی گئی عمارتوں والے تھانے ہیں جن میں تھانہ سول لائن (رقبہ 33کنال) ،تھانہ راوی روڈ( رقبہ 1کنال 19مرلے) ،تھانہ گڑھی شاہو رقبہ 11کنال 5مرلے اور تھانہ ٹاؤن شپ ( رقبہ 36کنال) شامل ہیں۔ان تھانوں کی عمارتوں کو خستہ حال ہونے کے باعث پھر سے تعمیر یا ری کنڈیشن کیا گیا ہے۔ 2004 سے 2008 کے دوران بنائے گئے تھانوں میں تھانہ ٹبی سٹی 2004میں تعمیر ہوا اس کا رقبہ 12کنال ،تھانہ مناواں 2005میں تعمیر ہوا اس کا رقبہ 38کنال،تھانہ مانگا منڈی 2007میں تعمیر ہوا اور رقبہ 7کنال ،تھانہ مصطفی آباد 2007میں تعمیر ہوا اس کا رقبہ 8کنال ،تھانہ باغبانپورہ 2008میں تعمیر ہوا اس کا رقبہ 5کنال ،تھانہ ڈیفنس اے 2008میں تعمیر ہوا اسکا رقبہ 5کنال ،تھانہ غازی آباد 2008میں تعمیر ہوااس کا رقبہ 4کنال ،تھانہ شمالی چھاؤنی 2008میں تعمیر ہوا اسکا رقبہ 18کنال ، تھانہ کاہنہ2008میں تعمیر ہوا اسکا رقبہ 14کنال، تھانہ رائیونڈ سٹی 2008میں تعمیر ہوا اسکا رقبہ 11کنال ، تھانہ برکی 2008میں تعمیر ہوا اسکا رقبہ 7کنال ،تھانہ ہڈیارا 2008میں تعمیر ہوا اسکا رقبہ 4کنال ، تھانہ نئی انارکلی 2008میں تعمیر ہوا اسکا رقبہ 4کنال اورتھانہ جنوبی چھاؤنی شامل ہے جو 2008میں تعمیر ہوا اس کا رقبہ 12کنال ہے۔ 11تھانوں کی عمارتیں 1990کی دہائی میں تعمیر کی گئی ہیں جو کہ تاحال استعمال کے قابل ہیں ان میں تھانہ سرور روڈ 1995میں تعمیر ہوا اسکا رقبہ 4کنال ، تھانہ گرین ٹاؤن 1995میں تعمیر ہوااس کا رقبہ13کنال ، تھانہ ماڈل ٹاؤن 1992میں تعمیر ہوا اسکا رقبہ 10کنال ،تھانہ موچی گیٹ1994میں تعمیرہوا اسکا رقبہ 2کنال13مرلہ ،تھانہ رنگ محل 1994میں تعمیر ہوا اس کا رقبہ 2کنال 13مرلہ ،تھانہ لٹن روڈ 1995میں تعمیر ہوا اس کا رقبہ 3کنال18مرلہ،تھانہ ریس کورس 1994میں تعمیر ہوا اس کا رقبہ 5کنال ، تھانہ غالب مارکیٹ 1994میں تعمیر ہوا اسکا رقبہ 2کنال،تھانہ اقبال ٹاؤن 1992میں تعمیر ہوا اسکا رقبہ 1کنال 17مرلے ،تھانہ مسلم ٹاؤن 1992میں تعمیر ہوا جس کا رقبہ 3کنال ، اورتھانہ سبزہ زارشامل ہے جو 1995میں تعمیر ہوا جس کا رقبہ 6کنال ہے۔ 14تھانے صوبائی دارالحکومت میں کرایہ کی عمارتوں میں قائم ہیں ان میں تھانہ شادباغ ،تھانہ شاہدرہ ٹاؤن ، تھانہ اسلامپورہ ،تھانہ شالیمار، تھانہ گجر پورہ ، تھانہ فیکٹری ایریا ، تھانہ کوٹ لکھپت ،تھانہ فیصل ٹاؤن ، تھانہ شادمان،تھانہ ساندہ ، تھانہ گلشن اقبال،تھانہ ملت پارک ،تھانہ سمن آباد اور تھانہ ہنجر وال شامل ہیں۔دوسری جانب 16تھانے دوسرے محکموں کی بلڈنگز پرقائم ہیں ان میں تھانہ ہربنس پورہ لاہور میونسپل کارپوریشن کی عمارت پرقائم ہے۔ تھانہ باٹا پور باٹا فیکٹری کی بلڈنگ پرقائم ہے۔ تھانہ نشتر کالونی واسا کی بلڈنگ پرقائم ہے۔ تھانہ نصیر آباد ایل ڈی اے کی بلڈنگ پرقائم ہے۔ تھانہ گارڈن ٹاؤن ایل ڈی اے کی اراضی پرقائم ہے۔ تھانہ لیاقت آباد ایل ڈی اے کی اراضی پرقائم ہے۔تھانہ شفیق آباد لاہور میونسپل کارپوریشن کی اراضی پر قائم ہے، تھانہ لاری اڈا لاہور میونسپل کارپوریشن کی بلڈنگ میں قائم ہے۔ تھانہ بھاٹی گیٹ محکمہ اوقاف کی عمارت میں قائم ہے۔ تھانہ گلشن راوی ایل ڈی اے کی اراضی پرقائم ہے۔ تھانہ وحدت کالونی پی ڈبلیو ڈی کی اراضی پرقائم ہے۔ تھانہ شیر اکوٹ لاہور میونسپل کارپوریشن کی اراضی پرقائم ہے۔

مزید :

علاقائی -