خیبرپختونخوا پولیس بے انتہا دلیری اور فرض شناسی کیلئے پورے خطے مین مشہور ہے ، ناصر درانی

خیبرپختونخوا پولیس بے انتہا دلیری اور فرض شناسی کیلئے پورے خطے مین مشہور ہے ...

  

 پشاور(پاکستان نیوز) انسپکٹر جنرل آف پولیس خیبر پختونخوا ناصر خان دُرانی نے آج سنٹرل پولیس آفس پشاور میں اعلیٰ بااثر شخصیات کو ٹریفک قوائد و ضوابط کی خلاف ورزیوں پر چالان کرنے والے ٹریفک وارڈن کے ریپڈ رسپانس سکواڈ کے ٹکٹ آفیسر رشید خان کو نقد انعام اور توصیفی اسناد سے نوازا۔ واضح رہے کہ ٹریفک وارڈن سسٹم میں ریپڈ رسپانس سکواڈ کے ٹکٹ آفیسر وں نے پچھلے پانچ مہینوں میں مختلف نوعیت کے خلاف ورزیوں پر 6729 اعلیٰ با اثر شخصیات کو چالان کیا ہے۔ جن میں ٹکٹ آفیسر رشید خان نے 3161 شخصیات کو چالان دیا ہے۔ ان میں ممبران قومی اسمبلی، سنیٹرز، ممبران صوبائی اسمبلی، سابقہ صوبائی وزراء، سیکریٹریز، ڈاکٹرز، پروفیسرز، وکلاء، ریٹائرڈ ججز اور دیگر اعلیٰ حکام وغیرہ شامل ہیں۔ با اثرشخصیات کو چالان کرتے وقت اُن کو کبھی رشوت کا لالچ دے دیا گیا تو کبھی ڈرایا دھمکایا بھی۔ تاہم وہ اپنے فرائض منصبی نہایت خوش اسلوبی،خندہ پیشانی اور خوش اخلاقی سے سرانجام دیتے رہے اور یہ سارے واقعات خُفیہ کیمرے کی آنکھ میں ریکارڈ ہو کر وقتاً فوقتاً سوشل میڈیا پر چلتے رہے۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے آئی جی پی نے کہا کہ خیبر پختونخوا پولیس بے انتہا دلیری اور فرض شناسی کے لیے پورے خطے میں مشہور ہے۔ آئی جی پی نے کہا کہ کمٹمنٹ اور حوصلے کے سامنے کوئی رکاوٹ اور مشکل نہیں ٹھہرسکتی اور کہاکہ ٹکٹ آفیسر رشید خان فورس کا قیمتی ہیرہ ہے جو عوام کے دل جیت کر اپنے فرائض سرانجام دیتے ہیں اور اُن کی فرض شناسی اور محنت شاقہ کو ساری فورس کے لیے قابل تقلید قرار دیا۔ یہاں یہ امر بھی قابل ذکر رہے کہ ماضی میں کوئی ٹریفک اہلکار اعلیٰ شخصیات کا چالان کرنا تو در کنار اُن کی گاڑی کو روکنے کی جرات بھی نہیں کر سکتے تھے۔ تاہم موجودہ صوبائی حکومت نے پولیس فورس کو مکمل پیشہ ورانہ آزادی دے رکھی ہے۔ یہ امر بھی باعث اطمینان ہے کہ چالان وصول کرنے والے کسی اعلیٰ شخصیت نے ٹکٹ آفیسر کا رشوت مانگنے اوربداخلاقی کی کبھی بھی کسی قسم کی شکایت نہیں کی بلکہ زیادہ تر شخصیات نے اُن کے اس فرض شناسی پر اُن کا حوصلہ بڑھایا۔ دوسری جانب عوام نے بھی بلا امتیاز با اثر شخصیات کو چالان کرنے پر ٹریفک آفیسر کے کردار کو سراہتے ہوئے اپنے بھر پور اعتماد کا اظہار کیا ہے۔ اور اُن کو ہر شعبہ زندگی میں اپنانے کی ضرورت پر زور دیا ہے۔ یہ شخصیات زیادہ تر موبائل استعمال ،سیٹ بلٹ، بغیر لائسنس، جعلی ڈرایؤنگ لائسنس اور غیرقانونی نمبر پلیٹ کے خلاف ورزیوں پر چالان کیے گئے

مزید :

پشاورصفحہ آخر -