- چارسدہ میں منشیات فروشی کے ا ڈوں کی بھرمار،عوام کا جینا حرام

- چارسدہ میں منشیات فروشی کے ا ڈوں کی بھرمار،عوام کا جینا حرام

  

چارسدہ (بیورورپورٹ)چارسدہ ٹاؤن اور پڑانگ کے مختلف علاقوں میں منشیات فروشی کے اڈوں نے عوام کا جینا محال کر دیا ۔ بااثر لوگوں کے حجروں میں چلنے والے جوئے کے اڈوں پر پولیس کی پر اسرار خاموشی ۔سر در یاب اور گر دو نواح کے سیاحتی مقامات پر سرعام جسم فروشی کا سلسلہ جاری ۔ ڈکیتی اور چوری کی وارداتوں میں خیرت انگیز حد تک اضافہ ۔بااثر جرائم پیشہ عناصر قانون کو گھر کی لونڈی اور موم کی گڑیا بنا کر اپنی مرضی کے مطابق اس سے کھلواڑ کھیل رہے ہیں ۔ تفصیلات کے مطابق تھانہ پڑانگ کے حدود چارسدہ ٹاؤن اور پڑانگ کے مختلف علاقوں کے ساتھ ساتھ سر دریاب کے سیاختی مرکز اور ارد گرد کے علاقوں میں بااثر لوگوں نے قانون کے رکھوالوں کو ساتھ ملا کر معاشرتی برائیوں کا نہ ختم ہو نے والا سلسلہ ڈنکے کی چھوٹ پر جاری رکھا ہو اہے ۔ تھانہ پڑانگ کے بالکل سامنے واقعہ گورنمنٹ پوسٹ گریجویٹ کالج چارسدہ کے طلباء سرعام منشیات فروشی ، جواء بازی اور دیگر معاشرتی برائیوں پر پر اسرار خاموشی اختیار کر نے پر تھانہ پڑانگ پولیس کے خلاف سڑکوں پر نکل آئے اور پٹی کمشنر کے دفتر کے سامنے زبر دست احتجاجی مظاہرہ کرکے پڑانگ پولیس پر ڈرگ مافیا سے ساز باز اور دیگر معاشرتی برائیوں میں جرائم پیشہ عناصر کا ساتھ دینے کا الزام لگا یا ۔ دلچسپ امر یہ ہے کہ طلباء کے احتجاجی مظاہرے سے ضلعی نائب ناظم حاجی مصور شاہ نے بھی خطاب کیا اور پڑانگ پولیس پر سنگین الزامات لگائے۔ تھانہ پڑانگ پولیس کے حوالے سے طلباء ، تاجروں اور شہریوں کے تحفظات بجا ہیں کیونکہ تھانہ پڑانگ کے حدود میں گورنمنٹ پوسٹ گریجویٹ کالج چارسدہ کے ساتھ ساتھ گرلز ڈگری کالج اور متعدد گرلز سکولز بھی واقعہ ہیں جہاں منشیات فروشی ، جوئے بازی اور دیگر معاشرتی برائیاں زوروں پر ہیں جس کی وجہ سے طالبات کو تعلیمی اداروں تک آنے جانے کے لئے سو جتن کرنا پڑتے ہیں۔ گرلز سکولوں اورگرلز کالجز کے سامنے ہر وقت جرائم پیشہ لوگوں او ر نوجوانوں کا جگھمٹا لگا رہتا ہے جس کی وجہ سے شریف والدین بچیوں کو تعلیمی اداروں میں داخل کرنے سے پہلے سو بار سوچتے ہیں ۔ جگہ جگہ جوئے کے اڈے ، منشیات کی سرعام فروحت اور جسم فروشی نے نوجوان نسل کا مستقبل داؤ پر لگا یا ہے جبکہ سٹریٹ کرائم میں خطرناک حدتک اضافہ سے شریف لوگوں کا جینا حرام ہو چکا ہے ۔ شہری علاقوں میں لوگ سرعام گھروں تک محدود رہتے ہیں اور کسی کو باہر نکلنے کی جرات نہیں ہو تی کیونکہ پڑانگ پولیس بھی تھانے سے نکلنے کا نام نہیں لیتی ۔ تھانہ پڑانگ کے حدودات ، ٹاؤن ، سردریاب ، پڑانگ ،ماجوکے اورکئی دیگرعلاقوں میں جرائم پیشہ عناصر کی سرگرمیوں کی وجہ سے شام کے بعد غیر اعلانیہ کرفیو کا سماء ہو تا ہے ۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -