سعودی عرب پر سنگین ترین الزام لگ گیا، نئی مشکل

سعودی عرب پر سنگین ترین الزام لگ گیا، نئی مشکل
سعودی عرب پر سنگین ترین الزام لگ گیا، نئی مشکل

  

نیویارک (مانیٹرنگ ڈیسک) یمن میں حوثی باغیوں کے خلاف جاری سعودی جنگ کے بارے میں اقوام متحدہ نے ایک انتہائی متنازعہ بیان جاری کرتے ہوئے سعودی عرب پر بڑا الزام لگادیا ہے۔ اخبار ڈیلی سٹار کے مطابق گزشتہ روز اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق زاید رعد الحسین نے اقوام متحدہ کی سیکیورٹی کونسل کو بتایا کہ یمن میں سعودی اتحاد کی جنگی کارروائی عام شہریوں کی بڑی تعداد میں ہلاکت کا سبب نظر آتی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ زمین اور فضا سے رہائشی علاقوں میں بمباری کا مشاہدہ کیاگیا ہے اور حتیٰ کہ ہسپتالوں اور سکولوں کو بھی نشانہ بنایا گیا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ عام شہریوں کی ہلاکت کے لئے دونوں اطراف ہی ذمہ دار ہیں لیکن سعودی اتحاد کی فضائی کارروائی کے نتیجے میں زیادہ ہلاکتیں ہوئی ہیں۔

سعودی اتحاد نے مارچ میں حوثی باغیوں کے خلاف کارروائی کا آغاز کیا تھا۔ اقوام متحدہ کی رپورٹ کے مطابق یمن میں اب تک تقریباً 6ہزار افراد ہلاک ہوچکے ہیں جن میں سے تقریباً 600 بچے ہیں۔ اقوام متحدہ کا یہ بھی کہنا ہے کہ یمن میں دو کروڑ سے زائد افراد مدد کے ضرورت مند ہیں، یعنی گزشتہ ایک سال کے دوران اس ملک کی تقریباً 80 فیصد آبادی شدید مسائل کی شکار ہوچکی ہے اور بین الاقوامی مدد کی منتظر ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -