اب سعودی عرب میں ٹریفک سگنل توڑنے پر جرمانہ نہیں ہوگا اگر۔۔۔

اب سعودی عرب میں ٹریفک سگنل توڑنے پر جرمانہ نہیں ہوگا اگر۔۔۔
اب سعودی عرب میں ٹریفک سگنل توڑنے پر جرمانہ نہیں ہوگا اگر۔۔۔

  

ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی عرب میں سرخ اشارے کی خلاف ورزی سنگین جرم تصور کیا جاتا ہے اور اس جرم پر بھاری جرمانہ بھی کیا جاتا ہے، مگر ایک صورت ایسی بھی ہے کہ سرخ اشارے کی خلاف ورزی کرنے پر بھی آپ کو جرمانہ نہیں ہوسکتا۔

اخبار الوطن نے ٹریفک ڈیپارٹمنٹ کے حوالے سے بتایا ہے کہ ایمبولینس کو راستہ دینے کیلئے لال بتی کا قانون لاگو نہیں ہوتا اور اگر آپ بھی ایسی صورتحال کا سامنا کریں تو بے فکر ہوکر ایمبولینس کو راستہ دیں، چاہیے اس کیلئے اشارے کی خلاف ورزی کرنا پڑے۔ ٹریفک حکام کا کہنا ہے کہ ایمبولینس کو راستہ دینے کیلئے سرخ اشارہ توڑنے والے کو اگر جرمانہ کیا بھی جائے تو وہ ابشیر سسٹم سے یا ٹریفک ڈیپارٹمنٹ کے دفتر جاکر اسے منسوخ کرواسکتا ہے۔

سعودی ولی عہد نے600 سالہ تاریخ بدل دی،ایسا اعلان کر دیا کہ سعودی عرب میں لوگ ایک دوسرے کا منہ دیکھنے لگے

یاد رکھیں کہ دیگر صورت میں سرخ اشارے کی خلاف ورزی، ممنوعہ نمبر پلیٹ کے استعمال، سرکاری و ایمرجنسی گاڑیوں کے لئے مخصوص اشیاءکے استعمال اور سکول کے بچوں کو اتارتی یا سوار کراتی گاڑیوں کو اوورٹیک کرنے جیسے جرائم پر آپ کو 3000 سے 6000 ریال کا جرمانہ ہوسکتا ہے۔

مزید :

عرب دنیا -