نوجوان لڑکی سے 2 اوباشوں کی زیادتی اور پھر پولیس نے لڑکی کو ہی گرفتار کرلیا، لڑکی نے ایسا کیا کردیا؟ جان کر آپ بھی اس ’انصاف‘ پر دنگ رہ جائیں گے

نوجوان لڑکی سے 2 اوباشوں کی زیادتی اور پھر پولیس نے لڑکی کو ہی گرفتار کرلیا، ...
نوجوان لڑکی سے 2 اوباشوں کی زیادتی اور پھر پولیس نے لڑکی کو ہی گرفتار کرلیا، لڑکی نے ایسا کیا کردیا؟ جان کر آپ بھی اس ’انصاف‘ پر دنگ رہ جائیں گے

  

نئی دلی (نیوز ڈیسک) بھارت سے جنسی جرائم کی خبریں آنا اگرچہ معمول کی بات ہے لیکن بدقسمتی دیکھئے کہ ہر نیا واقعہ اس قدر ہولناک ہوتا ہے کہ انسان پچھلے واقعات کو اس کے مقابلے میں کمتر سمجھنے لگتا ہے۔ ایک ایسی ہی لرزہ خیز واردات بھارت کے مشرقی شہر مین پوری میں کی گئی جہاں ایک خاتون کو سربازار جنسی درندگی کا نشانہ بنانے کی کوشش کی گئی اور جب اس نے مزاحمت کی تو لاٹھیوں کے وار کرکے بیچاری کو لہولہان کردیا گیا۔

’میں 6سال کی تھی تو مجھے ظالموں نے جنسی غلام بنالیا‘

اخبار دی انڈی پینڈنٹ کی رپورٹ کے مطابق اس دلخراش واقعے کی ویڈیو اور تصاویر بھی منظر عام پر آچکی ہیں، جن میں خون میں لت پت خاتون کے ساتھ اس کی ننھی بچی کو بھی دیکھا جاسکتا ہے، جو خوف سے چلاتی نظر آتی ہے۔ مظلوم خاتون نے مقامی میڈیا کو بتایا کہ وہ اپنے خاوند کے ساتھ ایک مارکیٹ سے گزررہی تھی کہ دو اوباش نوجوانوں نے اس کا دوپٹہ کھینچا اور بے حیائی کے ساتھ اس کے جسم کو چھونا شروع کردیا۔ جب خاتون کے شوہر نے اسے بچانے کی کوشش کی تو بدمعاشوں نے اس پر حملہ کردیا۔ انہوں نے ناصرف اس شخص پر لاٹھیوں سے حملہ کیا بلکہ عصمت دری پر مزاحمت کرنے پر خاتون کو بھی سرعام بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا۔

ملزم سفاکانہ کارروائی کرنے کے بعد باآسانی فرار ہوگئے اور کسی کو توفیق نہ ہوئی کہ انہیں ظلم سے روکتا یا پکڑنے کی کوشش کرتا۔ مقامی پولیس کے سربراہ سنیل سکسینا کا کہنا تھا کہ ملزمان میں سے ایک کو گرفتار کرلیاگیا ہے جبکہ دوسرے کی تلاش جاری ہے۔ بے حیائی اور درندگی کے یوں سرعام مظاہرے پر ہر کوئی حیران ہے۔ حزب مخالف کے سیاستدان وجے بہادر پاتھک کا کہنا تھا ”یہاں قانون اور امن کا جنازہ نکل گیا ہے۔ حکمران جتنی بھی نئی سکیمیں متعارف کرواتے رہیں لیکن لوگ، اور حتیٰ کہ پولیس بھی بدمعاشوں سے خوفزدہ ہیں، جنہیں ریاست کا تحفظ حاصل ہے۔ ان کا کچھ بھی نہیں کیا جاسکتا۔“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -