ریگولیٹری ڈیوٹی مکمل واپس نہ لینے تک تحفظات دور نہیں ہونگے، لاہور چیمبر

ریگولیٹری ڈیوٹی مکمل واپس نہ لینے تک تحفظات دور نہیں ہونگے، لاہور چیمبر

لاہور ( کامرس رپورٹر)لاہور چیمبر کے صدر ملک طاہر جاوید نے اکنامک کوآرڈینیشن کمیٹی کی جانب سے مخصوص اشیاء پر ریگولیٹری ڈیوٹی واپس لینے کے فیصلے کو سراہتے ہوئے توقع ظاہر کی ہے کہ ریگولیٹری ڈیوٹی تب تک مکمل طور پر واپس لی جائے گی جب تک تاجرو ں کے تحفظات دور نہیں ہوجاتے۔ کاروباری برادری کے وفد سے خطاب کرتے ہوئے لاہور چیمبر کے صدر نے کہا کہ انہوں نے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی، وزیراعظم کے خصوصی معاون برائے ریونیو ہارون اختر، وفاقی وزیر برائے صنعت و پیداوار غلام مرتضی خان جتوئی، قومی اسمبلی کی سٹینڈنگ کمیٹی برائے فنانس قیصر احمد شیخ ، چیئرمین ایف بی آر اور ممبر کسٹمز زاہد کھوکھر سمیت دیگر شخصیات سے ملاقاتیں کیں اور حقائق سے آگاہ کرتے ہوئے ریگولیٹری ڈیوٹی کی مکمل واپسی کا مطالبہ کیا، اچھی خبر یہ کہ انہوں نے لاہور چیمبر کے نکتہ نظر سے مکمل اتفاق کیا اور یہ مسئلہ جلد حل کرانے کی یقین دہانی کرائی۔ ملک طاہر جاوید نے کہا کہ لاہور چیمبر پہلے دن سے ہی ریگولیٹری ڈیوٹی کے معاملے پر پوری طرح فعال اور اعلیٰ حکومتی شخصیات سے ملاقاتیں کرکے انہیں آگاہ کررہا ہے کہ ضروری درآمدی اشیاء اور خام مال پر ڈیوٹی معیشت کو بْری طرح متاثر کرے گی جو پہلے ہی روپے کی قدر میں کمی، بھاری قرضوں اور تجارتی خسارے کی وجہ سے دباؤ میں ہے۔

انہو ں نے کہا کہ ریگولیٹری کا مقصد مقامی صنعت کو تحفظ دینا ہوتا ہے مگر موجودہ طریقہ کار کے تحت ریگولیٹری ڈیوٹی اْن ضروری اشیاء اور خام مال پر عائدکردی گئی جو اندرون ملک تیار نہیں ہوتے یا پھر اتنی کم مقدار میں بنتے ہیں کہ مقامی ضروریات پوری کرنے سے قاصر ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومتی شخصیات کی جانب سے مثبت ردّ عمل بہت حوصلہ افزاء ہے ، جزوی طور پر ریگولیٹری ڈیوٹی واپس لینا خوش آئند اور توقع ہے کہ ریگولیٹری ڈیوٹی مکمل طور پر واپس لیکر کاروباری برادری کے تحفظات دور کیے جائیں گے۔

مزید : کامرس