قانون پسند کاروباری طبقہ مخلص اور نڈر قیادت چاہتا ہے ، پیاف

قانون پسند کاروباری طبقہ مخلص اور نڈر قیادت چاہتا ہے ، پیاف

لاہور ( کامرس رپورٹر)قانون پسند کاروباری طبقہ اپنے مسائل کے حل کے لئے مخلص اور نڈر قیادت چاہتا ہے جو بزنس کمیونٹی کے مسائل کے لئے بھرپور وکالت کرے۔ بزنس کمیونٹی کھوکھلے دعووں نعروں اور جھوٹے وعدوں کو پہچان چکی ہے اعتماد اور حمایت کے دعوے یک طرفہ بڑھکوں سے زیادہ کچھ نہیں صدارت کا حقیقی امیدوار حاجی غلام علی ہیں جنہیں چاروں صوبوں کے کاروباری طبقہ کی بہت بڑی حمایت حاصل ہے ۔ ان خیالات کا اظہار بزنس کمیونٹی کے تقریباًً 160 افراد سے عرفان اقبال شیخ چیئرمین پیاف کی صدارت میں منعقدہ ایگزیکٹو کمیٹی اجلاس میں میاں انجم نثار اور اور انکی ٹیم کا تقابلی جائیزہ پیش کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ یوبی جی گروپ کسی بھی مشکل وقت میں کاروباری طبقہ کے لیے سامنے نہیں آیا اور نہ ہی کسی احتجاج کا حصہ بنا جبکہ سنٹرل چیئرمین بزنس مین پینل میاں انجم نثار ،چیئرمین پنجاب خواجہ شاہ زیب اکرم صدارتی امیدوار حاجی غلام علی ودیگر عہدیداران بجلی کی لوڈ شیڈنگ ، گیس کی قلت،مارک اپ کی شرح نیچے لانے،صنعتی علاقوں میں سرکاری اہلکاروں کی مداخلت، ناجائزچھاپوں یا ریفنڈ کلیمز کی ادائیگیوں میں تاخیر جیسے مسائل حل کرانے میں ہمیشہ پیش پیش رہے ۔ جہاں ضرورت پڑی حکمت اور تدبر سے بزنس کمیونٹی کو گھمبیر مسائل سے نجات دلائی ۔پیاف کے ایگزیکٹو ممبران چیمبر کے سابقہ ایگزیکٹو ممبران اور باقی تمام حضرات صنعتی علاقوں اور مارکیٹوں کے ذمہ داران ہیں ۔پچھلے تین سالوں میں فیڈریشن کا کردار نہ ہونے کے برابر تھا، کاروباری اور صنعتی علاقوں کو ایف بی آر کی ہراسمنٹ اور ناجائز چھاپوں کاسامنا رہا ۔ نوبت یہاں تک پہنچ گئی کہ صنعتی علاقوں کے کاروباری حصزات کو پر امن احتجاج کرنا پڑا ۔ اس میں میاں انجم نثار پیش پیش رہے اور ایف بی آر کے متعلقہ افسران اور حکومتی نمائندوں کولگام دی۔ اسی طرح صنعتوں کو گیس کی قلت کا سامنا رہا ۔ ہفتے میں دو یا تین دن سےُ زیادہ گیس نہیں ملتی تھی۔ سردیاں آتے ہی صنعتوں کو گیس کی سپلائی معطل کر دی جاتی ہے ۔ صنعتکاروں نے بہت چیخ و پکار کی کہ برآمدی آرڈرز ختم ہو جائیں گے ۔ بے روزی بڑھے گی ۔ صنعتکاروں کے لیے بنکوں کی اقساط دینا نا ممکن ہو جائے گا ۔

اس میں میاں انجم نثار اور بزنسمین پینل کے دیگر قائدین ہمہ وقت صنعتکاروں کے ساتھ رہے لیکن یو بی جی نے فیڈریشن کی سطح پر کوئی کردار ادا نہ کیا بلکہ حکومتی چاپلوسی کرتے رہے۔ یہی صورت حال کاروباری اداروں کے ریفنڈ کلیمز کی ہے ٹی ڈیپ جیسے فعال ادارے کو غیرفعال بنا دیا گیا ہے ۔یو بی جی نے ریفنڈ کلیمز کی ادائیگیوں میں تاخیر کا عنصر ختم کرانے میں کوئی کردار ادا نہیں کیا ۔ اس لیے چیئرمین پیاف عرفان اقبال شیخ کی صدارت میں ہونے والے اجلاس میں لاہور اور گردو نواح کے 160کاروباری افراد نے اپنے تقابلی جائیزہ میں بتایا ہے کہ فیڈریشن کے الیکشن میں ووٹ کے حقیقی حق دار صرف بزنسمین پینل اور اسکے اتحادی پاکستان بزنس گروپ کے نمائندے ہیں جو ہر مشکل گھڑی میں صنعتکاروں اور تاجروں کے ساتھ نہیں بلکہ پیش پیش رہے ۔ عبد ا لصبور شیخ ۔سیکر ٹری پیاف

مزید : کامرس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...