حدیبیہ کیس میں سپریم کورٹ نے روایات کے برعکس فیصلہ دیا ،جسٹس(ر) وجیہہ الدین

حدیبیہ کیس میں سپریم کورٹ نے روایات کے برعکس فیصلہ دیا ،جسٹس(ر) وجیہہ الدین

لاہور(نامہ نگار خصوصی )عام عوام اتحادپارٹی کے سربراہ جسٹس ریٹائرڈ وجیہہ الدین احمدنے کہا ہے کہ عدلیہ بحالی تحریک کے بعد وکلا ء سے عوام نے بہت سی امیدیں باندھ رکھی ہیں وہ یہ امید رکھتے ہیں کہ ملک کے جو حالات ہیں اس میں وکلاء ہی ان کی قیادت کریں گے۔اس کے باوجود کہ وکلاء نے عدلیہ کو بحال کرایا وہ اس تحریک کے بعد اپنی رفتارکو برقرارنہ رکھ سکے۔لاہور ہائی کورٹ بار میں خطاب کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ ہماری عدلیہ وسیع تر تناظر میں بہتر کام کر رہی ہے ،ہمیں کئی باتوں پہ اعتراض ہوسکتاہے لیکن بات کو کہیں تو ختم ہونا چاہے جیسے کہ حدیبیہ کیس میں سپریم کورٹ نے اپنے ہی قائم کردہ روایات کے برعکس فیصلہ دیا ۔ماضی میں ایئر مارشل اصغر خان کیس اور میاں نواز شریف کے طیارہ اغواء کیس کو سپریم کورٹ نے کئی سال کے بعد قابل سماعت قراردے کراس پر فیصلہ بھی دیالیکن ملک کو ہر صورت میں آگے بڑھنا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ آج میں اپنے وکلاء بھائیوں سے ان کاساتھ مانگنے آیا ہوں ہم نے عام لوگ اتحاد پارٹی تشکیل دی ہے جس میں ہم نے طے کیا ہے کہ ہم 80% فیصد نشستیں عام لوگوں کو دیں گے اور ہماری نظر میں عام لوگ وہ ہیں جن کی ماہانہ آمدنی ایک لاکھ رواپے سے کم ہے اور اللہ تعالیٰ نے چاہا تو ہم اپنے منشور کے تحت ملک سے کرپشن ،بیروزگاری ، بنیادی انسانی حقوق کی فراہمی جس میں تعلیم، صحت ، ملازمتیں سو فیصد عوام کو دلوائیں گے۔لاہور ہائی کورٹ بار کے صدر چودھری ذوالفقار علی نے جسٹس (ر) وجیہہ الدین احمد کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ آج ہمارے مہمان جس ہال میں خطاب کرنے جارہے ہیں وہ ایک تاریخی ہال ہے جب کبھی جمہوریت کے خلاف شب خون مارا گیا تو ہر طالع آزما ء کے خلاف جدوجہد کا آغاز وکلاء نے اسی ہال سے کیا۔

مزید : علاقائی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...