سائلین سے پیسے لینے والے عدالتی اہلکاروں پر خدا کی لعنت: چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ

سائلین سے پیسے لینے والے عدالتی اہلکاروں پر خدا کی لعنت: چیف جسٹس لاہور ...

لاہور(نامہ نگار خصوصی )چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ نے کہا ہے کہ مشکلات میں گھرے افراد ہی عدالت کا دروازہ کھٹکھٹاتے ہیں ،اس عدالتی اہلکار پر خدا کی لعنت ہو گی جو عدالت میں آنے والے سائل سے پیسے لیتا ہو۔چیف جسٹس لاہورہائیکورٹ سید منصور علی شاہ نے یہ بات عدالتی اہلکاروں سے خطاب کے دوران کہی ۔ چیف جسٹس نے مزیدکہا کہ یہ ادارہ میری جاگیر نہیں عوامی خدمت سے ہی سکون ملتا ہے، عدالت عالیہ کو کرپشن فری دیکھنا چاہتا ہوں، خیانت کرنے والے پر اللہ کی لعنت ہو۔ اورملازمین بشمول خواتین کے استعداد کار کو برھانے کیلئے غیر ملکی ٹریئنگ کے دائرہ کار کو بڑھایا جائے گا۔ عدالتی ملازمین کی تنخواہیں تمام اداروں میں کام کرنے والے ملازمین کی تنخواہوں سے زیادہ ہونے کی بناء پر ان سے توقعات بھی زیادہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملازمین کے لئے ہاؤسنگ کالونی بنانے کی کو شش کی جارہی ہے ۔ہم پولیس کی مدد سے اپنے ادارے کی سیکورٹی کے لئے مارشلز تیار کریں گے۔عدلیہ میں خواتین اور خصوصی افراد کاکوٹہ بڑھایا جائے گا، جلد ہی لاہور ہائیکورٹ میں خواتین ملازمین کے لئے ڈے کئیر سینٹر بنا دیا جائے گا،عدالتوں میں صنفی امتیاز ختم کیا جائے گا، چیف جسٹس نے کہا کہ ہم سب فیملی کی طرح ہیں۔ کیفے ٹیریا میں آئیں اور کھانا کھائیں۔ کیفے ٹیریا میں آپ کے ساتھ بیٹھ کر کھانا کھاؤں گا۔ جنوری کے پہلے ہفتے میں کیفے ٹیریے کا افتتاح کیا جائے گا۔ ڈرائیورز کوموٹر سائیکلزدی ہیں، نائب قاصد وں کو بھی موٹرسائیکلیں دینے کا پلان ہے۔ لاہور ہائی کورٹ کے ملازمین کی طرف سے چیف جسٹس کے اعزاز میں دیئے گئے اس ظہرانہ میں جسٹس مامون رشید شیخ، جسٹس امیر بھٹی، جسٹس عبد السمیع خان، جسٹس عابد عزیز شیخ، جسٹس شا ھدکریم، جسٹس علی اکبر قریشی، جسٹس شاھد بلال حسن،جسٹس جواد حسن اور جسٹس سردار احمد نعیم موجود تھے۔ رجسٹرارلاہورہائی کورٹ سید خورشید انور رضوی اور ڈی ڈی جی ڈائریکٹوریٹ آف ڈسٹرکٹ جوڈیشری محمد اکمل خان بھی تقریب میں موجود تھے۔

مزید : صفحہ آخر