تفتان بارڈر پر زائرین کی مشکلات ناقص حکومتی پالیسیوں کا نتیجہ ہے‘ علامہ علی رضا

تفتان بارڈر پر زائرین کی مشکلات ناقص حکومتی پالیسیوں کا نتیجہ ہے‘ علامہ علی ...

ملتان (سٹی رپورٹر)ایران عراق سے زیارات کے بعد واپس آنے والے زائرین جو تفتان بارڈر پر حکومتی ناقص انتظامات کی وجہ سے رکے ہوئے تھے آخر اپنے اپنے گھروں کو پہنچ (بقیہ نمبر42صفحہ12پر )

گئے ہیں جن میں سوتری وٹ ملتان کے بھی دو سو زائرین شامل ہیں سوتری وٹ کے زائرین کے اعزاز میں شیخ نیاز علی کی جانب سے امام بارگاہ زینبیہ سوتری وٹ میں ظہرانے کا اہتمام کیا گیا تھا جس میں حاجی اقبال حسین ,مرید حسین, بشارت قریشی, ذیشان حیدری, شوکت حسین, ضمیر حسین ,ظہور حسین, مختار حسین ,حاجی سجاد حسین, علی حسن ,اظہر حسین ,شوکت ہیرو ,مشتاق حسین ,دیگر زاہرین نے شرکت کی اس موقع پر علامہ سید علی اصغر نقوی نے خطاب کرتے ہوئے زاہرین کی مشکلات کوحکومت کی ناقص پالیسی اور غلط رویہ قرار دیا انہوں نے کہا کہ اپنے ہی ملک میں زاہرین کے ساتھ بیگانوں جیسا رویہ انتہائی دکھ کی بات ہے اور ایسا کئی سالوں سے ہو رہا ہے جس میں آج تک بہتری نہیں آئی انہوں نے کہا کہ تفتان بارڈر پر زائرین کے ساتھ قیدیوں سے بھی بدتر سلوک کیا جاتا ہے کئی کئی دن انہیں وہاں روک لیا جاتا ہے خواتین بچے بوڑھے مناسب انتظامات نہ ہونے اور موسم کی سختیوں کی وجہ سے پریشان ہوتے ہیں جس سے باہر کے ملکوں میں پاکستان کی بدنامی ہوتی ہے حکومت کو احتجاج کر کے کئی بار مطالبہ کر چکے ہیں لیکن بہری حکومت کچھ سننے اور ماننے کو تیار نہیں انہوں نے آج پھر حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ زائرین کے مسائل کے حل کے لیئے ٹھوس بنیادوں پر اقدامات کیئے جائیں اور تفتان بارڈر پر تمام سہولیات کا انتظام کیا جائے انہوں نے کہا کہ پورے ملک سے کوئیٹہ تک کے سفر کی طرح کوئیٹہ سے تفتان کا سفر بھی آسان بنایا جائے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر