حصول انصاف کیلئے فیصلہ کن گھڑی آگئی ، فیصلے انفرادی نہیں اجتماعی ہونگے : طاہر القادری

حصول انصاف کیلئے فیصلہ کن گھڑی آگئی ، فیصلے انفرادی نہیں اجتماعی ہونگے : ...

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر)پاکستان عوامی تحریک کی سنٹرل کور کمیٹی کا ہنگامی اجلاس سربراہ ڈاکٹر طاہرالقادری کی زیر صدارت ان کی رہائش گاہ پر منعقد ہوا۔ اجلاس میں 31دسمبر کی ڈیڈ لائن،28دسمبر کی اے پی سی اور اتحادیوں سے رابطوں اور سانحہ ماڈل ٹاؤن کے حوالے سے تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا،ڈاکٹر طاہرالقادری نے کہا کہ سیاسی قائدین نے اے پی سی میں بھرپور شرکت کی یقین دہانی کروائی ہے ،ہم اپنے آئندہ کے لائحہ عمل میں تمام جماعتوں کو مشاورتی عمل میں شریک کررہے ہیں۔ ہمارے فیصلے انفرادی نہیں اجتماعی ہونگے ،حصول انصاف کیلئے فیصلہ کن گھڑی آگئی۔ اجلاس میں عوامی تحریک کے وکلاء نے بریفنگ دیتے ہوئے بتاہا کہ آج ہوم سیکرٹری کوپنجاب حکومت کی طرف سے بنائی جانے والی دونوں جے آئی ٹیز کی مصدقہ کاپیاں لینے کی درخواست دی گئی مگر ہوم سیکرٹری نے بے بسی کا اظہار کرتے ہوئے مصدقہ نقول فراہم کرنے سے انکار کر دیا اور عدالت جانے کا مشورہ دیا۔انہوں نے کہا کہ ہمارا مطالبہ ہے کہ انصاف کی فراہمی کیلئے سانحہ ماڈل ٹاؤن کے نامزد ملزمان کو عہدوں سے ہٹایا جائے یہ جب تک عہدوں پر رہیں گے فیئر تفتیش ہو سکے گی اور نہ فیئر ٹرائل کا حق ملے گا۔پورا نظام انہوں نے اپنی جکڑ میں لے رکھا ہے۔پراسیکیوشن کی یہ ذمہ داری ہے کہ وہ قاتلوں کی بجائے مظلوموں کے ساتھ کھڑی ہو۔انہوں نے کہا کہ چند دنوں کی بات ہے آج نہیں تو کل انہیں عہدوں سے ہٹنا ہے اور پورے سچ نے سامنے آنا ہے، بہت سے لوگ سچ اگلنے کیلئے بے تاب ہیں، پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ نے کہا کہ شریف خاندان نے عدلیہ کے خلاف اعلان جنگ کر رکھا ہے جو ریاست کے خلاف اعلان بغاوت ہے، بار اور بنچ کو اشرافیہ کے اس اعلان بغاوت کا نوٹس لینا چاہیے ،بار اور بنچ دونوں آئین اور عدلیہ کے انسٹیٹیوشن کے کسٹوڈین ہیں۔نواز شریف سادہ لوح عوام کو اپنے عدلیہ مخالف ایجنڈے کا حصہ بنانے کیلئے لوٹی گئی دولت پانی کی طرح بہارہے ہیں ۔

طاہرالقادری

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...