مریم نواز اگر پنجاب میں آگئیں تو پھر چہرے نئے ہونگے

مریم نواز اگر پنجاب میں آگئیں تو پھر چہرے نئے ہونگے

لاہور( جاوید اقبال سے) پل پل ادلتے بدلتے سیاسی منظر نامے میں اگر شہباز شریف واقعی مرکز میں قائدایوان منتخب ہوئے تو پنجاب کی وزارت اعلیٰ کا ہما کس کے سر پر بیٹھے گا؟ آثار وقرائن اور سیاسی پنڈت یہی بتاتے ہیں کہ پھر شہابز شریف کی جگہ مریم نواز لیں گی ۔اس کے ساتھ جڑا ہوا ایک اہم سوال یہ بھی کہ پھر وفاق اور پنجاب دونوں جگہ ٹیم میں کون کون شامل ہو گا؟یہ وہ سوالات ہیں جو لمحہ موجود کی سیاست اور صحافت میں دونوں جگہ ہی زیر بحث ہیں اور اقتدار کی غلام گردشوں سے تک رسائی رکھنے والے بھی ان پر اپنے اپنے حساب سے قیاس کے گھوڑے دوڑا رہے ہیں۔ذرائع کے مطابق اگر شہباز شریف وزیراعظم کے منصب پر براجمان ہو جائیں گے تو مریم نواز ہی پنجاب کی وزارت اعلیٰ کو سنبھالیں گی۔اس حوالے اورآنے والے مستقبل کے لحاظ سے مسلم لیگ (ن) کی اعلیٰ سطحی محفلوں اور مجلسوں میں زور و شور کے ساتھ اسی موضوع پر گفت و شنید اوربات چیت جاری ہے۔پنجاب میں تو نواز شریف کے قریبی ساتھی رانا ثنا ء اللہہی ہوں گے مگر ترتیب کچھ بدل جائے گی۔اڑتی چڑیا کے پر گن لینے کا دعوی کرنے والے ذرائع کا کہنا ہے کہ مریم پنجاب میں زیادہ ترتوجہ تعلیم اور نوجوان نسل پر دیں گی کیونکہ اس سے قبل وہ ایجوکیشن اور یوتھ لون پر بہت اچھا کام کر چکی ہیں،ویسے بھی تحریک انصاف کا ہدف بھی نئی نسل ہی ہے اس لحاظ سے بھی مریم نواز ان پر خاص توجہ دیں گی۔ان کی میڈیا ٹیم تو وہی ہو گی جو پہلے سے ہی سوشل میڈیا پر متحرک ہے لیکن اس کے ساتھ مریم اورنگزیب ،طلال چودھری،رانا افضل اوردانیال عزیز کی بھی شرکت کا خاصا امکاں اور ساماں ہے۔مریم کا پنجاب میں ہدف اور ٹارگٹ تو وہی دو چیزیں یعنی ایجوکیشن اور نسل نو ہی ہی رہیں گی،اس کے ساتھ و ہ ن لیگ کے پارلیمنٹرین سے بھی براہ رست رابطے میں رہیں گی ۔پنجاب کو مسلم لیگ (ن) کی سیاست کا گڑھ سمجھا جاتا ہے اور طویل عرصہ تک خود میاں نواز شریف کی پنجاب کی سیاست پر گرفت رہی ہے۔اسی بدولت ن لیگ وفاق میں اپنی مرکزی حکومت چلاتی آئی ہے۔اس وجہ سے سمجھا جا رہا ہے کہ پارٹی میں ان کی صاحبزادی کا نام اب وزارت اعلیٰ کے طور پر لیا جا رہا ہے ،مریم نواز کا آئندہ لاہور سے قومی اور صوبائی دو نشستوں سے الیکشن لڑنے کا امکان ہے۔ذرائع کے مطابق اگر مریم نواز پنجاب میں آ گئیں تو پھر پنجاب میں زیادہ تر چہرے نئے ہی ہونگے اور وہ اپنے حساب سے پنجاب کو کنٹرول کریں گی۔رہی بات دارالحکومت کی تو اس ضمن میں زیادہ تر امکان یہی ہے کہ اس کا قطعی اور حتمی فیصلہ تو خود نواز شریف ہی کریں گے مگر اس کے ساتھ شہبازشریف بھی جس کو منا سب سمجھیں گے اسلام آباد لے جائیں گے۔

مریم نواز

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...