ہمیں اپنی خارجہ پالیسی پر نظر ثانی کی ضرورت ہے

ہمیں اپنی خارجہ پالیسی پر نظر ثانی کی ضرورت ہے
 ہمیں اپنی خارجہ پالیسی پر نظر ثانی کی ضرورت ہے

  

لیفٹیننٹ جنرل(ر)غلام مصطفیٰ نے کہا کہ امریکی نائب صدر کو پہلے اپنے گھر کو درست کرنا چاہیے کہ جہاں آئے روز دہشت گردی کے واقعات رونما ہوتے ہیں جبکہ امریکہ کی ہمیشہ دوغلی پالیسی رہی ہے کہ ایک طرف وہ اپنی ناکامیوں کو پاکستان کے کھاتے ڈال کر کہتا ہے کہ ہم دہشت گردوں کو پناہ نہ دیں اور ان کے خلاف کاروائی کریں مگر دوسری جانب کبھی افغانستان تو کبھی قطر میں انہی دہشت گردوں سے مذاکرات بھی کرتا ہے۔لیفٹیننٹ جنرل(ر)غلام مصطفیٰ نے کہا کہ ہمیں ان دھمکیوں کا جواب دینے کے لیے اپنی خارجہ پالیسی پر نظر ثانی کی ضرورت ہے اور حکمرانوں کو چاہیے کہ اب وہ بھی امریکہ کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر بات کریں۔دہشت گردی کے خلاف جنگ میں جتنی قربانیاں پاکستان نے دی ہیں اور کسی نے نہیں دیں۔

غلام مصطفی

مزید : صفحہ اول