نئی افغان پالیسی خون کی داستان ، پاکستان نازک دور سے گزر رہا ، ملک کا بیانیہ انتہائی مضبوط ہونا چاہیے : اسفند یارولی

نئی افغان پالیسی خون کی داستان ، پاکستان نازک دور سے گزر رہا ، ملک کا بیانیہ ...
 نئی افغان پالیسی خون کی داستان ، پاکستان نازک دور سے گزر رہا ، ملک کا بیانیہ انتہائی مضبوط ہونا چاہیے : اسفند یارولی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

پشاور(این این آئی)عوامی نیشنل پارٹی کے سربراہ اسفندیارولی خان نے کہا ہے کہ پاکستان اس وقت نازک دور سے گزر رہا ہے ، آئندہ الیکشن میں ایسا انقلاب ہوگا کہ کپتان میانوالی میں بیٹھے دیکھتے رہ جائیں گے ،سپریم کورٹ نے کہا اے ٹی ایم خراب ہے تو کپتان نے کہا نہیں،کہتے ہیں کپتان صاحب آپکے اپنے وزراء سلطانی گواہ بن رہے ہیں،صوبائی اسمبلی میں اپنے وزیر نے وزیر اعلیٰ کو کرپٹ کہا۔پشاورمیں بشیر بلور کی برسی کی تقریب سے خطاب میں اسفندیار ولی خان کا کہنا تھا کہ اس وقت پاکستان نازک دور سے گزر رہا ہے،اس نازک وقت میں ایسی حکومت ملی جسکے جھوٹ کی مثال دنیا میں نہیں ملتی،ڈونلڈ ٹرمپ کو صدر بنانے والے بد بخت ہیں، بیت المقدس کا فیصلہ برداشت سے باہر ہے ،افغانستان کی نئی پالیسی خون کی داستان ہے،اسفندیارولی کا کہنا تھا کہ اگلے الیکشن سے پہلے فاٹا کو ضم نہ کیا گیا تو سب کو لال ٹوپی کا پتہ چلے گا،ہمیں میراث میں قربانی ملی ہے،لوگوں کو میراث میں دولت جائیداد ملتی ہے،نواز شریف کے منہ سے پختونخواہ لفظ سن کر خوشی ہوتی ہے،اب ایک جنگ باقی ہے امن کی جنگ،امن لانے کے لئے اتحاد کی ضرورت ہے۔اسفندیار ولی خان نے پی کے تھری کا ٹکٹ ہارون بلور کو دینے کا اعلان بھی کیا۔سینیٹر غلام احمد بلور نے کہا کہ آج اسمبلی میں تمام ممبران فاٹا خیبر پختونخوا میں ضم کرنے پر راضی ہیں،جو لوگ فاٹا انضمام کی مخالفت کرتے ہیں ان کو شرم آنی چاہیے۔

مزید : صفحہ اول