مائیک پنس کا بیان پاکستان میں کارروائیوں کا اعلان ہے : امریکی مبصرین

مائیک پنس کا بیان پاکستان میں کارروائیوں کا اعلان ہے : امریکی مبصرین

واشنگٹن (اظہر زمان، بیورو چیف) امریکی نائب صدر مائیک پنس کے واضح ترین الفاظ میں پاکستان پر سیدھے سیدھے الزام لگانے کے بیان کی جہاں وائٹ ہاؤس نے تفصیلات جاری کی ہیں وہیں واشنگٹن میں غیر جانبدار مبصرین کے فوری تبصرے بھی سامنے آگئے ہیں جن میں ان کاکہنا ہے امریکی نائب صدر پنس کے اس بیان کا یہ مطلب ہے کہ اب امریکہ پاکستان کی اجازت کے بغیر پاکستان اور افغا نستان کی مشترکہ سرحد کے قریب پاکستان کی حدود میں ڈرون حملوں کا سلسلہ تیز کردے گا اور افغان فورسز کی حوصلہ افزائی کرے گا کہ وہ سر حد ی علاقے میں زیادہ جارحانہ طریقے سے افغان طالبان کیخلاف کارروائی کرے اور اس کام میں امریکی فوج بھی ان کی مدد کرسکتی ہے۔ یاد رہے وائٹ ہاؤس میں نائب صدر مائیک پنس اور سکیورٹی ایڈوائزر جنرل میک ما سٹرکے پاکستان کے سخت مخالف شمار ہوتے ہیں، اب وہ کہہ رہے ہیں اگر پاکستان امریکہ سے تعاون کرے گا تو وہ بہت کچھ پائے گا لیکن اگر اس نے اپنا رویہ تبدیل نہ کیا اور دہشت گردوں کی پشت پناہی جاری رکھی تو پھر وہ بہت کچھ کھولنے کیلئے تیار رہے۔ یاد رہے اسی ہفتے صدر ٹرمپ نے امریکہ کی قومی سلامتی کی نئی پالیسی کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا پاکستان کواپنے علاقے میں موجود دہشت گردوں کا خاتمہ کرنا ہوگا کیونکہ امریکہ اس مد میں ہر سال پاکستان کو وافر رقم دیتا رہا ہے، امریکہ پاکستان کیساتھ دیرینہ شراکت داری کا خواہشمنداور چاہتا ہے پاکستان دہشت گردوں کیخلاف فیصلہ کن کردار ادا کرے۔ امریکی نائب صدر کرسمس کی سالانہ تعطیلات پر امریکی فوجیوں کو کرسمس کی مبارکباد دینے کیلئے افغانستان آئے تھے۔ وائٹ ہاؤس کے بیان کے مطابق مائیک پنس نے بگرام کے فوجی اڈے پر جہازوں کے ایک ہینگر میں پانچ سو کے قریب امریکی فوجیوں سے خطاب کیااور کہا نئی پالیسی کے تحت ٹرمپ انتظامیہ نے امریکی فوج پر عائد وہ پابندیاں ختم کردی ہیں جس کے باعث امریکی فوج کی صلاحیتیں محدود ہوگئی تھیں اور اب وہ دشمن سے پوری قوت اور سرعت سے لڑسکتی ہے۔ امریکی نائب صدر نے دعویٰ کیا کہ اس نئی حکمت عملی کے مثبت نتائج برآمد ہونا شروع ہوگئے ہیں۔ افغانستان میں امریکی فضائی حملوں میں ڈرامائی اضافہ ہوا ہے اور امریکی فوج کی افغان فورسز کے ہمراہ تازہ کارروائیوں کے نتیجے میں طالبان دفاعی پوزیشن پر چلے گئے ہیں۔ واشنگٹن میں پاکستانی سفارتی ذرائع سے امریکی نائب صدر کے اس تازہ بیان پر تبصرے کیلئے رابطہ کیا گیا تو کہاگیا اسلام آباد میں پاکستانی سیکرٹری خارجہ اس بیان کو پاکستان کیلئے خطرے کی گھنٹی قرار دے چکی ہیں، اس میں اضافہ کرتے ہوئے ان ذرائع نے کہا نائب صدر کے اس بیان سے دونوں ممالک کے درمیان اعتماد سازی کی تازہ کوششوں کو

یقیناًبہت بڑا دھچکا لگا ہے۔

امریکی مبصرین

مزید : صفحہ اول